نہ تنخواہیں ، نہ اقامہ ، پاکستانی ورکرز نے سعودی کمپنی کیخلاف مقدمہ کردیا

نہ تنخواہیں ، نہ اقامہ ، پاکستانی ورکرز نے سعودی کمپنی کیخلاف مقدمہ کردیا
نہ تنخواہیں ، نہ اقامہ ، پاکستانی ورکرز نے سعودی کمپنی کیخلاف مقدمہ کردیا

  

جدہ (خصوصی رپورٹ)ایک سال سے زائد عرصہ سے تنخواہوں سے محروم ایشیائی کارکنان نے انٹرنیشنل بلڈنگ سسٹم جدہ کیخلاف ینبومیں لیبرآفس میں مقدمہ دائرکردیاہے ،ان میں سے کئی کارکنان کے کفیل نے اقامہ کی بھی تجدیدنہیں کرائی ۔

روزنامہ پاکستان کو کارکنان نے بتایاکہ ’لیبرآفس نے ہدایت کی کہ ان کا مقدمہ ہائیکورٹ بھیج دیاجائے گا، لیکن طریقہ کارپر عمل کرتے ہوئے اس میں کم ازکم تین ہفتے لگیں گے‘۔18سال سے کمپنی میں چوکیداری کرنیوالے مشتاق نے بتایاکہ میں نے پاکستان میں اپنے بچوں کو سکول چھڑادیاہے ، اگرمجھے اپنے واجبات نہ ملے تو خدشہ ہے کہ وہ امتحان میں بھی نہیں بیٹھ سکیں گے ،تنخواہیں ہیں اور نہ ہی اقامہ ہے ۔

بتایاگیاہے کہ مشتاق کا اقامہ سات ماہ قبل زائدالمعیاد ہوگیا ہے اور وہ صرف میڈیکل انشورنس کار ڈ پر ہی وہاں موجود ہے جبکہ کمپنی کی طرف فراہم کی گئی رہائش کا مالک کا بھی کئی مرتبہ مکان خالی کرنے کا کہہ چکاہے کیونکہ اسے کرایہ ہی نہیں ملا۔

کمپنی میں سپروائزرصغیر خان نے بتایاکہ میرے پاس کہیں جانے کیلئے ایک ریال بھی نہیں کہ کوئی دوسری نوکری یاکفیل ڈھونڈ سکوں ، ہم سے بیشتراقامے نہ ہونے کی وجہ سے بھی کہیں آجانہیں سکتے ۔پاکستانی ورکرمحمدعمران فاروق نے بتایاکہ کارکنان نے متعلقہ سفارتخانوں سے بھی رابطہ کیا جہاں سے مدد کرنے کا دلاسہ ہی ملا، 9ماہ سے اسے تنخواہ نہیں ملی ،آٹھ ماہ سے اپنے خاندان کو کوئی رقم نہیں بھیجی، لیبرکورٹ میں مقدمہ دائر کردیاہے لیکن پانچ ماہ سے کوئی حل نہیں نکل سکا، لیبر کورٹ بھی کمپنی کی طرف داری کررہی ہے ، انٹرنیٹ کے ذریعے وزارت لیبر میں بھی شکایت درج کرائی لیکن کوئی عمل نہیں ہوا، 50کارکنان ابترصورتحال کا سامنا کررہے ہیں لیکن بدقسمتی سے پاکستانی سفارتخانے کا کردار بھی شرمناک رہاجبکہ بھارتی سفارتخانے نے ایکشن لیا اور اپنے کارکنان کی معلومات بھی اکٹھی کیں ، ہماری عبرتناک داستان وزیراعظم نوازشریف تک پہنچائی جائے ۔

بھارتی ورکرشمس الدین نے بتایاکہ اُن کے سفارتخانے بھی مدد کرنے کی یقین دہانی کرائی لیکن فی الحال مسئلہ حل نہیں ہوسکا۔

مزید :

عرب دنیا -