سپریم کورٹ بار نے بچوں کے اغواپر تحقیقاتی کمیٹی بنا دی،آئی جی بریفنگ دیں گے

سپریم کورٹ بار نے بچوں کے اغواپر تحقیقاتی کمیٹی بنا دی،آئی جی بریفنگ دیں گے
سپریم کورٹ بار نے بچوں کے اغواپر تحقیقاتی کمیٹی بنا دی،آئی جی بریفنگ دیں گے

  

لاہور(نا مہ نگار خصوصی)سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کے صدر بیرسٹر علی ظفر نے پنجاب میں بچوں کے اغواکے بڑھتے ہوئے واقعات کی تحقیقات کے لئے "ہنگامی کمیٹی "تشکیل دے دی ہے جو آج 30جولائی کوانسپکٹر جنرل پنجاب پولیس سے بچوں کے اغواکے معاملہ پر آگاہی لیں گے۔ کمیٹی کے ممبران میں پاکستان بار کونسل کے رکن اعظم نذیر تارڈ، لاہور ہائی کورٹ بار کے سابق صدر عابد ساقی،سپریم کورٹ بار کی نائب صدر تابندہ اسلام،سپریم کورٹ بار کی ایگزیکٹو کمیٹی کے رکن بدر منیر ملک اور نوید سہیل شامل ہیں۔بچوں کے اغواکے حوالے سے بیرسٹرعلی ظفر کا کہنا ہے کہ بچے قوم کا سرمایہ ہیں اور ان کی حفاظت حکومت پاکستان کی آئین پاکستان کے تحت ذمہ داری بنتی ہے،انہوں نے کہا کہ اتنے بڑے پیمانے پر بچوں کا اغوائایک لمحہ فکریہ ہے جس کے نتائج سنگین ہو سکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ پولیس کی ذمہ داری ہے کہ وہ اس بڑھتے ہوئے جرائم کو روکے۔انہوں نے مزید کہا کہ گھریلو وجوہات کی بنا پر گھر سے بھاگے ہوئے بچوں کی تعداد کو نظر انداز بھی کر دیا جائے تو لاپتہ ہونے والے بچوں کی تعداد غیر معمولی حد تک زیادہ ہے جس سے چشم پوشی نہیں کی جاسکتی، انہوں نے کہا کہ اس جرم میں یقینی طور پر ایک منظم گروہ ملوث ہے اور یہ بھی ممکن ہے کہ اس معاملے کے پیچھے دہشت گردوں کا ہاتھ ہوجو ان بچوں کا برین واش کر کے انہیں اپنے گھناﺅنے عزائم کے لئے استعمال کرتے ہیں،انہوں نے کہا کہ ایک قومی ٹاسک فورس بنانے کی ضرورت ہے جس میں خفیہ ایجنسی کے نمائندے بھی پولیس کے ساتھ شامل ہوں۔

مزید :

لاہور -