ہیلتھ یونیورسٹی اور سرور فاؤنڈیشن کے مابین فری میڈیکل کیمپس لگانے کامعاہدہ

ہیلتھ یونیورسٹی اور سرور فاؤنڈیشن کے مابین فری میڈیکل کیمپس لگانے کامعاہدہ

  

لاہور(جنرل رپورٹر)ملک میں فری میڈیکل کیمپس لگانے اور ہیپاٹائٹس کے مریضوں کی سکریننگ کے حوالے سے یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز، پاکستان سوسائٹی آف انٹرنل میڈیسن اور سرور فاونڈیشن کے مابین مفاہمتی یادداشت پر دستخط ہوئے۔ بیگم پروین سرور اور پروفیسر جاوید اکرم نے معاہدے پر دستخط کیے۔ اس موقع پر میڈیا نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے وائس چانسلر یو ایچ ایس پروفیسر جاوید اکرم نے کہاکہ ہماری کوشش ہے غریبوں کو مفت علاج کی سہولت فراہم کریں۔ سرور فاؤنڈیشن صوبے میں صاف پانی کی فراہمی کیلئے بہت اچھا کام کر رہی ہے۔فاؤنڈیشن کے اشتراک سے ملک بھر میں میڈیکل کیمپس لگانے جا رہے ہیں۔ پروفیسر جاوید اکرم نے مزید کہا کہ سرور فاؤنڈیشن ملک میں جہاں بھی میڈیکل کیمپس لگانا چاہے گی ہم وہاں ڈاکٹرز اور دیگر طبی سہولیات دیں گے۔ انھوں نے کہا کہ حکومت کی جانب سے سمارٹ لاک ڈآون کے فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہیں۔عید الفطر پر لاپرواہی سے کئی قیمتی زندگیاں ضائع ہو گئیں۔

پروفیسر جاوید اکرم کا کہنا تھا کہ نئے کپڑوں اور نئے جوتوں کی خواہش نے پورے ملک میں کورونا کی بیماری کو پھیلا دیا۔ انھوں نے سہ فریقی معاہدے کو ہیپاٹائٹس کے عالمی دن سے منسوب کرتے ہوئے کہا کہ ہیپاٹائٹس کا مرض ملک میں تیزی سے بڑھ رہا ہے۔ پاکستان میں تقریبا 10 فیصد آبادی ہیپاٹائٹس بی اور سی کا شکار ہے اور لاکھوں لوگ ایسے ہیں جنھیں معلوم ہی نہیں کہ انھیں ہیپاٹائٹس ہے۔ پروفیسر جاوید اکرم نے کہا کہ اس معاہدے کے تحت لگنے والے میڈیکل کیمپس کے ذریعے اگلے ایک سال میں 10 لاکھ افراد کی سکریننگ کریں گے

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -