وفاق المدارس اور پرائیویٹ ایجوکیشن نیٹ ورک کا تعلیمی ادارے کھولنے کا اعلان

وفاق المدارس اور پرائیویٹ ایجوکیشن نیٹ ورک کا تعلیمی ادارے کھولنے کا اعلان

  

پشاور(سٹی رپورٹر)پرائیویٹ ایجوکیشن نیٹ ورک اور وفاق المدارس نے مشترکہ طور پر اپنے ادارے کھولنے کا اعلان کردیا نجی تعلیمی ادارے15 اگست جبکہ وفاق المدارس بہت جلد اپنے ادرے کھولنے کا اعلان کریگا دونوں تنظیموں نے مستقبل میں بھی ایک ساتھ چلنے کا فیصلہ کیا جسکے لئے ایک مستقل رابط کمیٹی بنائی جائیگی اس موقع پر وفاق المدارس نے نجی سیکٹر کے مطالبات کی حمایت کی۔ پشاورپریس کلب میں مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے پرائیویٹ ایجوکیشن نیٹ ورک کے صوبائی نائب صدر فضل اللہ داؤدزئی، جنرل سیکرٹری سید انس تکریم اور وفاق المدارس خیبرپختونخواکے ناظم مولاناحسین احمد نے کہاکہ اج جب زندگی کے تمام شعبہ جات کھل گئے ہیں اور کورونا وباء کی شدت اور متاثرین میں بھی کمی آگئی ہے ایسی صورت میں تعلیمی ادارے خواہ وہ عصری ہیں یا دینی،مزید بند رکھنا مناسب نہیں یہ بیماری نہ ختم ہوگی نہ اتنی جلدی کوئی ویکسین کی امید ہے لہذا حکومت کو خود احتیاطی تدابیر کے ساتھ ادارے کھولنے کا اعلان کرنا چاہئے تھا تاکہ بچوں کا سال ضائع نہ ہو۔انہوں نے کہاکہ حکومت کی طرف سے تیسری دفعہ ادارے کھولنے کی تاریخ میں توسیع اور 15 ستمبر کے اعلان پر ہمیں شدید تحفظات ہیں اسلئے مجبوراً ہمیں خود اعلان کرنا پڑاہم نے ازخودایس اوپیزپرعمل درآمد کیلئے ہدایات اداروں کوجاری کردیئے ہیں۔انہوں نے کہاکہ وفاقی وزراء،وزیراعلیٰ،وزیرتعلیم سمیت کئی سیاسی جماعتوں کے قائدین سے ملاقاتیں کرچکے ہیں سول سوسائٹی، وکلا برادری، تاجر اور سیاسی پارٹیوں کو ھمارا ساتھ دینا چاہئے۔انہوں نے کہاکہ جب منڈیاں،شادی یال، بازار،شاپنگ مال اور پبلک ٹرانسپورٹ تک کھل گئے تو پھر تعلیمی ادارے بند رکھنے کی کوئی دلیل نہیں انشااللہ سات اگست کو مدارس اور پندرہ اگست کو تمام نجی ادارے کھولے جائینگے حکومت نے اگر روکنے کی کوشش کی تو ہم مشترکہ طور پر احتجاج اور سڑکوں پر نکلیں گے۔انہوں نے مطالبہ کیاکہ وزیراعلیٰ اپنے وعدے کے مطابق تین وزراء پرمشتمل کمیٹی کی سفارشات کو منظرعام پرلائے اس موقع پر پرائیویٹ ایجوکیشن نیٹ ورک کے رہنماؤں نے وفاق المدارس کے تحت بہترین انداز میں امتحانات لینے پر انہیں خراج تحسین پیش کیا اورکہاکہ پرائیویٹ ایجوکیشن نیٹ ورک اور وفاق المدارس کے درمیان مستقل بنیادوں پرورکنگ ریلیشن شپ کانظام قائم کیاجارہاہے ہم مشترکہ طو رپرتعلیم کیخلاف اور نظریاتی سرحدات کے تحفظ کیلئے کام کریں گے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -