18ارب کی خرد بردپر2 چیف انجینئرزکیخلاف تحقیقات شروع

18ارب کی خرد بردپر2 چیف انجینئرزکیخلاف تحقیقات شروع

  

لاہور(ارشد محمود گھمن)نیب نے محکمہ سی اینڈ ڈبلیو ایم اینڈ آر ہائی وے کے2 چیف انجینئرز کے خلاف اربوں روپے کے بے نامی اثاثہ جات کی تحقیقات شروع کردیں، مذکورہ افسران نے جون 2019-20ء کے دوران 18ارب روپے کے ترقیاتی فنڈز میں خرد برد کی تھی۔تفصیلات کے مطابق حکومت پنجاب نے جون2019-20ء میں سی اینڈ ڈبلیو کے چیف انجینئرایم اینڈ آرہائی وے ڈیپارٹمنٹ لاہور کو ترقیاتی منصوبوں سٹرکوں کی مینٹیننس،پیچ ورک اورسپیشل ریپیئرنگ کی مد میں تقریباً18ارب روپے کے فنڈ زجاری کئے،جن کو اس وقت کے چیف انجینئر اقبال اعوان اور موجودہ چیف انجینئر ندیم الدین نے اپنے5سپرنٹنڈنٹ انجینئرزاور20 ایگزیکٹو انجینئر زکی مبینہ ملی بھگت سے خرد برد کرلیا اور ٹھیکیداروں کو بوگس ادائیگیاں کرکے کاغذوں میں ترقیاتی کام مکمل کرنا دکھا دیا جبکہ عملی طور پر وہاں یہ رقم خرچ نہیں کی گئی۔چیف انجینئر اقبال اعوان سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ تمام الزامات بے بنیاد ہیں جبکہ چیف انجینئر ندیم الدین نے کوئی جواب دینے سے انکار کردیا۔

نیب تحقیقات

مزید :

صفحہ آخر -