کچرے کی وجہ سے برسات میں کراچی ڈوب گیا ،سندھ ہائیکورٹ صوبائی حکومت اور بلدیاتی اداروں پر برہم،ذمہ داران فوری طلب

کچرے کی وجہ سے برسات میں کراچی ڈوب گیا ،سندھ ہائیکورٹ صوبائی حکومت اور ...
کچرے کی وجہ سے برسات میں کراچی ڈوب گیا ،سندھ ہائیکورٹ صوبائی حکومت اور بلدیاتی اداروں پر برہم،ذمہ داران فوری طلب

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن)سندھ ہائیکورٹ کچرااورنکاسی آب کا نظام متاثرہونے پرصوبائی حکومت اور بلدیاتی اداروں پر برہم ہوگئی ،ڈائریکٹر کے ایم سی اور میئرکراچی کے دفتر سے ذمہ دار افسر کو فوری عدالت طلب کرلیاگیا۔جسٹس خادم حسین شیخ نے کہاکہ کچرے کی وجہ سے برسات میں کراچی ڈوب گیا ،کراچی کاڈوبنا بڑا المیہ ہے کسی کو احساس ہی نہیں ۔

جسٹس خادم حسین شیخ نے کہاکہ کچرے کی وجہ سے برسات میں کراچی ڈوب گیا ،کراچی کاڈوبنا بڑا المیہ ہے کسی کو احساس ہی نہیں ،ہر طرف غیرقانونی تعمیرات اور کچرانہ اٹھانے کی وجہ سے کراچی ڈوب گیا،ہرادارہ ایک دوسرے پر ذمہ داری ڈالتا ہے ۔

جسٹس خادم حسین شیخ نے کہاکہ کسی نے دیکھا کراچی میں گاڑیاں بارش کے پانی میں ڈوبی ہوئی تھیں ؟۔لوگ گھروں سے اپنے بچوں کو نہیں نکال پا رہے تھے ،برسات میں لوگوںکے گھر اور سامان سب تباہ ہو گیا۔

جج سدھ ہائیکورٹ نے استفسار کیا کہ کیا ہم میں سے کوئی بارش کے اور گندے پانی میں جاسکے گا؟،جسٹس خادم حسین شیخ نے صوبائی حکومت سے استفسار کیاکہ یہ توبارش نے شہر کو ڈبویا،عید قرباںپر آلائشوں کوٹھکانے لگانے کیلئے کیا بندوبست کیاگیا؟،سرکاری وکیل نے کہاکہ متعلقہ اداروں کو فنڈز فراہم کرنے ہیں آلائشوں کو ٹھکانے لگانے کابندوبست کیا جائے گا۔

جسٹس خادم حسین شیخ نے کہاکہ حکومت کو کام کرنے سے پہلے فنڈز کی فکرہوتی ہے ،سرکاری وکیل نے کہاکہ ڈسٹرکٹ سنٹرل سے کچرااٹھانے کی ذمہ داری کے ایم سی اورسالڈ ویسٹ مینجمنٹ کی ہے ۔

سندھ ہائیکورٹ کراچی میں کچرااورنکاسی آب کا نظام متاثرہونے پرصوبائی حکومت اور بلدیاتی اداروں پر برہم ہوگئی ،ڈائریکٹر کے ایم سی اور میئرکراچی کے دفتر سے ذمہ دار افسر کو فوری عدالت طلب کرلیا۔

مزید :

قومی -علاقائی -سندھ -کراچی -