قومی اسمبلی ،انسداد دہشتگردی اور سلامتی کونسل ایکٹ ترمیمی بل کثرت رائے سے منظور

قومی اسمبلی ،انسداد دہشتگردی اور سلامتی کونسل ایکٹ ترمیمی بل کثرت رائے سے ...
قومی اسمبلی ،انسداد دہشتگردی اور سلامتی کونسل ایکٹ ترمیمی بل کثرت رائے سے منظور

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)قومی اسمبلی میں انسداد دہشتگردی اورسلامتی کونسل ایکٹ ترمیمی بل 2020 کثرت رائے سے منظور کرلیا گیا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق سپیکر اسد قیصر کی زیرصدار ت قومی اسمبلی کااجلاس ہوا،انسداد دہشت گردی ترمیمی بل 2020ایوان میں پیش کیا گیا،مشیر پارلیمانی امور بابراعوان نے بل پیش کیا،انسداد دہشت گردی ترمیمی بل کی شق وار منظوری لی گئی،انسداد دہشتگردی ایکٹ ترمیمی بل 2020 کثرت رائے سے منظورکرلیاگیا،ایوان میں حکومت کی جانب سے پیش کی گئی 3 ترامیم منظورکرلی گئیں ،اپوزیشن نے انسداد دہشتگردی ایکٹ ترمیمی بل مسترد کردیا۔

قومی اسمبلی نے سلامتی کونسل ایکٹ ترمیمی بل 2020 بھی منظور کرلیا،ترمیمی بل کی منظوری کے بعد اپوزیشن نے شدید احتجاج کیااور ایجنڈے کی کاپیاں پھاڑ دیں۔

قومی اسمبلی سے منظور ہونے والے انسداد دہشتگردی ترمیمی بل کے مطابق ممنوعہ افراد کوکوئی بینک یا فنانشل ادارہ قرض یا کریڈٹ کارڈ جاری نہیں کر سکے گا،کالعدم افراد کے پہلے سے جاری شدہد اسلحہ لائسنس منسوخ کر دیئے جائیں گے ،کالعدم شخص بغیر کسی تاخیر کے اسلحہ لائسنس قریبی پولیس سٹیشن میں جمع کرائے گا،قانون کے مطابق کالعدم افراد کو 25ملین تک جرمانہ کیا جا سکے گا۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -