وہ آدمی جو 31 سال سے ایک جزیرے پر تنہا رہ رہا ہے

وہ آدمی جو 31 سال سے ایک جزیرے پر تنہا رہ رہا ہے
وہ آدمی جو 31 سال سے ایک جزیرے پر تنہا رہ رہا ہے

  

روم(مانیٹرنگ ڈیسک) اٹلی میں ایک آدمی ایسا ہے جو گزشتہ 31سال سے تنہاءایک خوبصورت جزیرے پر رہ رہا ہے اور اب حکام اسے وہاں سے نکالنے کی جدوجہد کر رہے ہیں۔میل آن لائن کے مطابق اس 81سالہ آدمی کا نام ماﺅرو مورانڈی ہے جو 1989ءمیں کورسیکا اور سرڈینیا کے قریب واقع جزیرے بوڈیلی پر منتقل ہوا اور تب سے وہاں اکیلا رہ رہا ہے۔ ابتدائی طور پر وہ حادثاتی طور پر اس جزیرے پر پہنچا تھا۔ وہ اپنی کشتی پر سفر کر رہا تھا کہ بوڈیلی کے قریب پہنچ کر کشتی کا انجن خراب ہو گیا اور وہ اس جزیرے پر اتر گیا۔

مورانڈی کو یہ خوبصورت جزیرہ اس قدر پسند آیاکہ اس نے وہاں گھر بنا کر رہنا شروع کر دیا۔ اس سے پہلے وہاں کوئی انسان آباد نہیں تھا اور اب تک بھی صرف مورانڈی ہی وہاں رہ رہا ہے۔ تاہم اب حکام کی طرف سے مورانڈی کو جزیرہ خالی کرنے کا نوٹس دے دیا گیا ہے۔ حکومت کی طرف سے اس جزیرے کو نیشنل پارک کا حصہ بنا دیا گیا ہے اور میڈیا رپورٹس کے مطابق بہت جلد مورانڈی کا گھر گرا دیا جائے گا تاہم مورانڈی حکومت کے خلاف قانونی چارہ جوئی کر رہا ہے تاکہ اسے وہاں سے نہ نکالا جا سکے۔ مورانڈی نے سی این این سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ”مجھے خطرہ ہے کہ اگر مجھے بوڈیلی سے نکال دیا گیا تو بوڈیلی کا بھی خاتمہ ہو جائے گا۔ “ واضح رہے کہ پہلے اس جزیرے سے لوگ ناواقف تھے، مگر جب مورانڈی نے یہاں شفٹ ہونے کے بعد اس کے خوبصورت ساحلوں اور قدرتی مناظر کی تصاویر سوشل میڈیا پر پوسٹ کرنی شروع کیں تو سیاح یہاں چھٹیاں منانے جانے لگے۔ اب مورانڈی کے مطابق ہر سال لگ بھگ 1300سیاح گرمیوں کی چھٹیاں وہاں گزارنے آتے ہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -