پی سی بی کی سابق کھلاڑیوں کو ایک بار پھر میدان میں آنے کی دعوت، شاندار کام کر دیا

پی سی بی کی سابق کھلاڑیوں کو ایک بار پھر میدان میں آنے کی دعوت، شاندار کام کر ...
پی سی بی کی سابق کھلاڑیوں کو ایک بار پھر میدان میں آنے کی دعوت، شاندار کام کر دیا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے سابق کھلاڑیوں کوایک بار پھر میدان میں آنے کی دعوت دیدی ہے اور ریٹائرڈ کھلاڑیوں کیلئے امپائرز اور میچ ریفریز کے کردار میں روزگار کا موقع اور ڈومیسٹک کرکٹ میں میچ آفیشلز کی ذمہ داریاں نبھانے کیساتھ ساتھ انہیں بین الاقوامی سطح پر اپنی مہارت دکھانے کا ایک واضح راستہ فراہم کر رہا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پی سی بی اس سلسلے میں سابق کھلاڑیوں کی میچ آفیشلز سمیت مختلف رولز میں ڈومیسٹک سیزن 21-2020ءمیں شمولیت پر سنجیدگی سے غور کیا جارہا ہے۔ پی سی بی ریٹائرڈ کھلاڑیوں کیلئے امپائرز اور میچ ریفریز کے کردار میں روزگار کا موقع اور ڈومیسٹک کرکٹ میں میچ آفیشلز کی ذمہ داریاں نبھانے کیساتھ ساتھ انہیں بین الاقوامی سطح پر اپنی مہارت دکھانے کا ایک واضح راستہ بھی فراہم کررہا ہے۔

فی الحال انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) کے ایلیٹ پینل برائے میچ آفیشلزمیں علیم ڈار ہی واحد پاکستانی ہیں اور انہیں بین الاقوامی سطح پر بہت قابل احترام اور معتبر امپائر سمجھا جاتا ہے، احسن رضا، شوذب رضا، محمد آصف یعقوب اور راشد ریاض وقار بھی آئی سی سی کے انٹرنیشنل پینل میں شامل ہیں لیکن آئی سی سی کے ایلیٹ پینل برائے میچ ریفریز میں کوئی پاکستانی شامل نہیں تاہم 2 پاکستانی محمد انیس اور محمد جاوید ملک انٹرنیشنل پینل برائے میچ ریفریز میں شامل ہیں۔

روزگارکا یہ موقع پی سی بی کی اس پالیسی کے عین مطابق ہے جس کے تحت ڈومیسٹک نظام میں سابق کھلاڑیوں کی زیادہ سے زیادہ شمولیت کیساتھ ساتھ اپنے مقامی ٹیلنٹ کی تیاری ہے۔ اس حوالے سے اہلیت کا معیار کم از کم 50 فرسٹ کلاس میچز اور 40 سال سے کم عمر مقرر کیا گیا ہے اور مقررہ اہلیت پر پورا اترنے والے خواہشمند امیدوار 10 اگست تک اپنے کوائف abdul.hameed@pcb.com.pk پر جمع کرواسکتے ہیں۔

یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ حال ہی میں ہائی پرفارمنس پروگرام میں پی سی بی نے سابق کھلاڑیوں کو مختلف کوچنگ رولز سنبھالنے کی ترغیب دی ہے، اس حوالے سے پی سی بی کوایسے سابق انٹرنیشنل اورفرسٹ کلاس کرکٹرز کی تلاش ہے جن کے پاس کم از کم75 فرسٹ کلاس میچوں کا تجربہ ہونے کیساتھ ساتھ پی سی بی لیول ٹو یا اس کے برابر ایکریڈیشن ہونا چاہیے۔

مزید :

کھیل -