رواں مالی سال کا ٹیکس وصولی ہدف حاصل کرنے کے قریب ، ٹیکس کلچر کو فروغ نہ ملنا ، امور میں جدت کا فقدان بد قسمتی ہے : ڈاکٹر ارشاد

رواں مالی سال کا ٹیکس وصولی ہدف حاصل کرنے کے قریب ، ٹیکس کلچر کو فروغ نہ ملنا ...

چارسدہ( مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں ) چیئرمین فیڈرل بورڈ آف ریونیو ڈاکٹر محمد ارشا د خان نے کہا ہے رواں مالی سال میں 35 سو بلین روپے ٹیکس وصولی کا ہدف مقرر کیا گیا ہے جس میں اب تک 32 سو بلین سے زائد ٹیکس وصولی کی جا چکی ہے امید ہے باقی ماندہ ٹیکس رواں ماہ کے آخر تک وصول کر لیا جائے گا ، ٹیکس چوری روکنے کیلئے ٹھوس اقدامات کئے جا رہے ہیں تاکہ مزید نئے ٹیکس لگانے کی ضرورت نہ پڑے ۔بارڈر پر کسٹم ہاؤس کے قیام سے ٹیکس ریکوری میں بہتری آئیگی۔ گزشتہ روز چارسدہ میں ایف بی آر آفس کے نئی عمارت کے سنگ بنیاد رکھنے کی تقریب سے خطاب اور بعد ازاں میڈیا سے گفتگو میں انکا مزید کہنا تھا ٹیکس نظام کو مزید شفاف بنانے ،خامیاں ،کوتاہیاں ختم کرنے کیلئے پورے جذبہ سے کام کر نے کی ضرورت ہے ،ایف بی آر اضلاع کی سطح پر ٹیکس وصولی کے نظام میں بہتری کیلئے عملی اقدامات کر رہا ہے جس سے ٹیکس نظا م میں موجودہ خامیاں ختم ہونے میں مدد ملے گی ۔ ضلعی ٹیکسیشن دفاتر کی بنیادی ذمہ داری براہ راست ٹیکسوں میں اضافہ کرنا ہے اور اس حوالے سے ڈسٹرکٹ ٹیکسیشن آفیسر کمشنر کو رپورٹ دینے کا پابند ہے ۔ تاجر و صنعت کار ٹیکس دفاتر جانے سے گریزاں ہیں ، ٹیکس افسران اپنے رویوں اور امور میں بہتری لا کر تاجروں اور صنعت کاروں کا اعتماد حاصل کریں،ٹیکس نیٹ ورک کو مزید بہتر و فغال بنانے کیلئے ڈسٹرکٹ ٹیکسیشن آفیسر کو اختیارات اور انفراسٹرکچر فراہم کیا جا رہا ہے ۔ انہوں نے واضح کیاکہ سی پیک منصوبہ سے ملک کی ٹیکس پالیسی میں کسی قسم کی تبدیلی نہیں ہو گی ۔ بہتر نیٹ ورک کی بدولت ہی ملک میں شفاف احتساب ممکن ہو گا۔ بد قسمتی سے وطن عزیز میں ٹیکس کلچر کو فروع نہیں مل رہا جبکہ ٹیکس امور میں جدت کا بھی فقدان ہے ،تاہم ورلڈ بینک کے تعاون سے ٹیکس نظام میں بہتری لا ئی جا رہی ہے ،انکا کہنا تھا ٹیکس افسران کو چینی زبان سیکھنے کے حوالے سے اقدامات بھی زیر غورہیں ۔

ڈاکٹر ارشاد

مزید : علاقائی