پاکستان کو سبق سکھانے کیلئے سرجیکل سڑائیکس سے زیادہ بہتر آپشنز ہیں ، بھارتی آرمی چیف کی نئی بڑھک

پاکستان کو سبق سکھانے کیلئے سرجیکل سڑائیکس سے زیادہ بہتر آپشنز ہیں ، بھارتی ...

  

نئی دہلی(اے این این) بھارتی آرمی چیف جنرل بپن راوت نے نئی بڑھک لگاتے ہوئے کہاہے کہ پاکستان کو سبق سکھانے کیلئے سرجیکل اسٹرائیکس سے زیادہ بہتر آپشنز موجود ہیں،امریکہ کی طرف سے سید صلاح الدین کو عالمی دہشت گرد قرار د یئے جانے کے بعد میں انتظار کروں گا اور دیکھوں گا کہ کیا پاکستان واقعی سید صلاح الدین کو محدود کرنے کی کوشش کرتا ہے؟ کشمیری رہنماؤں سے مذاکرات امن قائم ہونے پر ہی ہوسکتے ہیں، میں اس شخص سے مذاکرات کروں گا جو میرے فوجی قافلے پر حملہ نہ کرنے کی ضمانت دے گا ۔’’ہندوستان ٹائمز‘‘ سے انٹرویومیں انہوں نے کہا کہ پاکستان کا خیال ہے کہ وہ آسان جنگ لڑ رہا ہے جس سے اسے بہت سے فائدے حاصل ہورہے ہیں لیکن ہمارے پاس سرجیکل سٹرا ئیکس سے کہیں زیادہ بہتر و مثر آپشنز موجود ہیں۔ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کے وحشیانہ مظالم اور لائن آف کنٹرول پر پاکستانی شہری علاقوں پر بلا اشتعال فائرنگ،بمباری جیسے واقعات کو یکسر نظرانداز کرتے ہوئے انہوں نے دعویٰ کیا کہ ہماری فوج وحشی نہیں، ہم نظم و ضبط والی آرمی ہیں میں کھوپڑیوں کے مینار بنانا نہیں چاہتا۔ سید صلاح الدین روزانہ احتجاج کی اپیلیں کررہے ہیں تو ہم دیکھیں گے کہ پاکستانی حکومت کشمیری رہنما کو حقیقی معنوں میں کنٹرول کرتی ہے یا نہیں، امریکی حکومت کی طرف سے حافظ سعید کے سر پر انعامی رقم مقرر ہے لیکن ان کے خلاف بھی کوئی کارروائی نہیں کی جاتی۔، ہمیں اس بات کو یقینی بنانا ہے کہ امن لوٹ آئے ۔ بھارتی فوج کشمیری نوجوانوں کے دل جیتنے کی کوشش کررہی ہے ہم حادثاتی نقصان نہیں چاہتے نہ ہی جھڑپوں میں معصوم لوگوں کی گرفتاری چاہتے ہیں۔ غلط فہمیوں کی موجودگی کا اعتراف کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ 12 اور 13 سال کے کشمیری بچے خودکش بمبار بننا چاہتے ہیں، ہم ایسے نوجوان رہنماؤں کو ڈھونڈ رہے ہیں جن سے بات کی جاسکے، میں تشدد ترک کرنے والے لوگوں کو پسند کرتا ہوں۔ انہوں نے بھارتی فوج کی جانب سے کشمیریوں کو انسانی ڈھال بنانے کے انسانیت سوز اور سفاکانہ فیصلے کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ میں وہاں موجود نہیں مجھے نہیں معلوم کہ میرے جوان وہاں کیا کررہے ہیں لیکن میں ان کی حوصلہ افزائی جاری رکھوں گا۔ واضح رہے کہ گزشتہ سال جولائی میں حزب المجاہدین کے نوجوان کمانڈر برہان مظفر وانی کی ہلاکت کے بعد سے کشمیر میں آزادی کی تحریک زور پکڑ چکی ہے بھارتی فورسز کی ریاستی دہشت گردی میں اب تک 200 سے زائد کشمیری جاں بحق اور ہزاروں معذور و زخمی ہو چکے ہیں۔

مزید :

علاقائی -