حکومت نے مسلم لیگ (ق) کے بنائے برن سنٹر بند کئے، شہباز شریف سانحہ کے ذمہ دار ہیں: شجاعت حسین، پرویز الہیٰ

حکومت نے مسلم لیگ (ق) کے بنائے برن سنٹر بند کئے، شہباز شریف سانحہ کے ذمہ دار ...

لاہور / گجرات ( بیورورپورٹ)مسلم لیگ (ق) کے صدر و سابق وزیر اعظم چودھری شجاعت حسین نے کہا ہے کہ عید پر ہمیں دہشتگردی کے خلاف قربانیاں دینے والوں کے شہداء کو بھی یاد رکھنا چاہئے، سانحہ احمد پور شرقیہ کے اصل ذمہ دار وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف ہیں کیونکہ مسلم لیگ(ق) کے دور میں بنائے گئے برن سینٹر بند نہ کیے گئے ہوتے تو سی ون تھرٹی کے ذریعے مریضوں کو لاہور منتقل کرنے کی ضرورت نہ پڑتی ۔ پاکستان مسلم لیگ کے سینئر مرکزی رہنما و سابق نائب وزیر اعظم چودھری پرویز الٰہی نے کہا ہے کہ شہباز شریف میرے نام کی تختیاں اتار کر وہاں اپنی تصاویریں لگا لیں لیکن خداراعوامی مفاد کے منصوبوں کو مکمل کر دیا جائے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گجرات میں نمازِ عید کی ادائیگی کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر چودھری وجاہت حسین، چودھری شفاعت حسین، چودھری مونس الٰہی ، چودھری راسخ الٰہی ، چودھری حسین الٰہی ، چودھری شافع حسین ، چودھری محمد الٰہی و دیگر بھی موجود تھے۔ چودھری شجاعت حسین نے کہا کہ عید کے موقع پر ملک کی سلامتی اور ترقی کیلئے دعائیں کرنی ہے جن لوگوں نے ملک کے دفاع اور دہشت گردی کے خلاف لڑتے ہوئے اپنی جان کی قربانیاں دی انہیں بھی عید پر یاد رکھاجائے ۔ چودھری شجاعت حسین نے کہا کہ سانحہ احمد پور شرقیہ انتہائی افسوس ناک ہے ،سیاست سے بالا تر ہوکر کہتا ہوں کہ اس کے ذمہ دار شہباز شریف ہیں کیونکہ وہاں پر چودھری پرویز الٰہی کے دور میں دو برن یونٹ تعمیر کیے گئے تھے میں چودھری پرویز الٰہی سے کہوں گا کہ وہ اپنے نام کی تختیاں اتار دے اور وہاں شہباز شریف اپنے نام کی تختیاں لگا لیں۔ ایک سوال کے جواب میں چودھری شجاعت حسین نے کہا کہ جے آئی ٹی سپریم کورٹ ہے اس کے خلاف باتیں کرنے والے عدالت کے خلاف باتیں کر رہے ہیں۔ سپریم کورٹ اللہ کو حاضر و ناضر جان کر ملک اور قوم کے مفاد میں فیصلہ کرے گی ۔ اس موقع پر چودھری پرویز الٰہی نے کہا کہ ماہِ رمضان میں پوری قوم نے حکمرانوں کو بدعائیں دی ہے اور ان کے گھر جانے کی دعائیں کی ہیں اگر عدالت حکمرانوں کو نااہلِ کر دیتی ہے تو انھیں چُپ کر کے گھر کو لوٹ جانا چاہیے اور اگر ن لیگ نے عدالتی فیصلہ قبول نہ کیا تو پوری قوم سڑکوں پر ہو گی۔ ایک سوال کے جواب میں چودھری پرویز الٰہی نے کہا کہ ن لیگ کے وزراء نواز شریف کی بولی بولتے رہے جب وزراء سے تسلی نہ ہوئی تو نواز شریف نے خود بولنا شروع کر دیا ہے۔ دکھ اور افسوس کی بات ہے کہ نواز شریف سپریم کورٹ کے بارے میں مذاق اور تماشے جیسے الفاظ استعمال کر رہے ہیں۔ ن لیگ در حقیقت اپنے پسند کے فیصلے کروانا چاہتی ہے ۔ انہوں نے کہا کے میرے دور میں بننے والے میو ہسپتال کا سرجیکل کا ٹاور اور برن یونٹ کے منصوبے التواء کا شکار ہیں۔ وزیر اعلیٰ شہباز شریف وہاں سے میری تختیاں اتار کر اپنی تختیاں لگا لیں ۔

مزید : صفحہ آخر