حکمرانوں نے جے آئی ٹی کو ڈرایا دھمکایا تو ہرگز چپ نہیں بیٹھوں گا: عمران خان

حکمرانوں نے جے آئی ٹی کو ڈرایا دھمکایا تو ہرگز چپ نہیں بیٹھوں گا: عمران خان

اسلام آباد(آئی این پی) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ نواز شریف کے خلاف کریمنل انویسٹی گیشن ہو رہی ہے اور وہ کہہ رہے ہیں کہ جے آئی ٹی نے میرے سوالوں کا جواب نہیں دیا ،وزیر اعظم نے لندن پریس کانفرنس میں جے آئی ٹی کے خلاف بات کی (ن) لیگ والے کہتے ہیں کہ ان کیخلاف فیصلہ آیا تو قوم نہیں مانے گی‘ جے آئی ٹی کو ڈرانے یا دھمکانے کی کوشش کی گئی تو چپ نہیں بیٹھوں گا ‘ اگر انہوں نے فیصلہ خلاف آنے پر کچھ کرنے کی کوشش کی تو ایک کال دوں گا قوم تیار بیٹھی ہے ‘ سارا پاکستان باہر نکلنے کیلئے تیار ہے ‘ اگر مریم نواز جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہو رہی ہے تو یہ نواز شریف کا قصور ہے ‘ جے آئی ٹی کے آنے والے فیصلے کی قوم کو پہلے ہی مبارکباد دیتا ہوں‘ نیا پاکستان پل اور سڑکیں بنانے سے نہیں ملک میں انصاف کا نظام آنے سے بنے گا‘مسلمانوں کو لڑانے کیلئے بین الاقوامی سازش ہو رہی ہے،ہم سب کو تیار ہوجانا چاہیے ۔ بین الاقوامی سازش ہو رہی ہے۔ شیعہ اور سنی کو لڑایاجائے گا یہاں پہلے عراق میں لڑائی شروع ہوئی شیعہ اور سنی کو پاکستان کو اس لڑائی کو روکنے میں کردار ادا کرنا چاہیے۔ میڈیا سے گزشتہ روز بات چیت کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ جے آئی ٹی اور سپریم کورٹ کے خلاف باتیں کی ہیں۔ نواز شریف کے خلاف کریمنل انوسٹی گیشن ہو رہی ہے اور وہ کہہ رہا ہے کہ میرے سوالوں کا جواب نہیں دیا۔ نواز شریف کے خلا ف منی لانڈرنگ کا الزام ہے۔ سالانہ 10 ارب ڈالر کی منی لانڈرنگ ہو رہی ہے۔ و زیر اعظم نے لندن پریس کانفرنس میں جے آئی ٹی کے خلاف بات کی ۔ عمران خان نے کہا کہ یہ کہتے ہیں کہ ان کے خلاف فیصلہ آیا تو قوم نہیں مانے گی۔ رانا ثناء اللہ نے بھی کہا کہ قوم نہیں مانے گی۔ جے آئی ٹی کو ڈرانے یا دھمکانے کی کوشش کی گئی تو چپ نہیں بیٹھوں گا۔ اگر آپ کے خلاف فیصلہ آیا اور آپ نے کچھ کرنے کی کوشش کی تو ایک کال دوں گا قوم تیار بیٹھی ہے سارا پاکستان باہر نکلنے کیلئے تیار ہے۔ لوگوں کو فیصلے کا انتظار ہے۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف کی وجہ سے مریم نواز کو پیش ہونا پڑ رہا ہے اگر مریم نواز جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہو رہی ہیں تو یہ نواز شریف کا قصور ہے ۔ نواز شریف کے پاس کوئی جواب نہیں اس لئے دباؤ ڈالا جا رہاہے۔ جب پہلی دفعہ طاقتور قانون کے نیچے آیا گا تو نیا پاکستان بنے گا۔ نیا پاکستان پل اور سڑکیں بنانے سے نہیں ملک میں انصاف کا نظام آنے سے بنے گا۔ عمرن خان نے کہا کہ میگا پراجیکٹس کمیشن بنانے کیلئے بنائے جا رہے ہیں ۔ جے آئی ٹی کے آنے والے فیصلے کی قوم کو پہلے ہی مبارکباد دیتا ہوں۔ اشتہاروں میں بجلی پیدا وہ رہی ہے حقیقت میں نہیں۔ انہوں نے کہا کہ شریف خاندان نے پہلے جو ثبوت دئیے اس میں کچھ نہیں تھا ۔ میرے تمام دستاویزات سپریم کورٹ میں رکھے ہیں۔ عمران خان نے کہا کہ لندن فلیٹس کا منی ٹریل ثابت نہیں کیا۔جمائما کو طلاق کو 13 سال ہو گئے ہیں اس کے باوجود ساری منی ٹریل ظاہر کی۔ انہوں نے کہا کہ یہ صرف اداروں کو ڈس کریڈٹ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ کیا آپ صرف پنجاب کے وزیر اعظم ہیں؟۔ یہ جے آئی ٹی کے قیام کو اپنی فتح کہہ رہے تھے آج یہ جے آئی ٹی کو متنازعہ بنا رہے ہیں۔ شہباز شریف جے آئی ٹی بننے پر وزیر اعظم کو مٹھائی کھلا رہا تھا ۔انہوں نے کہا جو حادثے عید سے پہلے ہوئے ہر جگہ پاکستانیوں کو تکلیف ہوئی۔ بہاولپور کا حادثہ بہت افسوس ناک تھا۔ کوئٹہ اور پارا چنار کے واقعہ سے ملک کو جھٹکا لگا۔ ۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف کو کوئٹہ اور پارا چنار بھی جانا چاہیے تھا ۔ چھوٹے صوبوں میں احساس محرومی ہے۔ وزیر اعظم کی ذمہ داری ہے۔ پرویز الہٰی کے دور میں بننے والے ہسپتال ایسے ہی پڑے ہوئے ہیں۔ اتنے بڑے پنجاب میں برن سنٹر نہیں ہے۔ 21 سال شریف برادران نے پنجاب پر حکومت کی ہے۔ حالات دیکھیں ہسپتالوں ‘ یونیورسٹیوں اور سکولوں کے یہ پیسہ کدھر خرچ کر رہے ہیں۔ میگا پراجیکٹ سے پہلے لوگوں کی بنیادی ضروریات پوری کریں۔ عمران خان نے کہا کہ کبھی سنا ہے مودی باہر لوگوں کو لے کرجا رہاہے۔ نواز شریف کا بیرون ملک دوروں کا یک دن کا خرچ 27 لاکھ روپے ہے۔

مزید : صفحہ اول