واپڈا کے لوڈشیڈنگ خاتمہ کے دعوے ٹھس، میٹھی عید پھیکی

واپڈا کے لوڈشیڈنگ خاتمہ کے دعوے ٹھس، میٹھی عید پھیکی

  

کوٹ ادو ‘ ٹھٹھہ صادق آباد ‘ بدھلہ سنت ‘ کلر والی ‘ صادق آباد ‘ سیت پور ( نمائندگان ) بجلی کی لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری ‘ حکومتی دعوے ٹھس‘ عید کا نمازی جاں بحق ‘ خطیب بے ہوش ہوگیا کوٹ ادو سے تحصیل رپورٹر کے مطابق عید کے تینوں روز حکومت کی جانب سے بجلی کی لوڈ شیڈنگ نہ کرنے کے دعوے بھی جھوٹ کا پلندہ ثابت ہوئے،عید،ٹرو اور مرو کے روز بھی بجلی بندش اور ٹرپنگ کا سلسلہ جاری رہا،جسکی وجہ سے عوام کو عید کی تیاری میں مشکلات کا سامنا رہا،جسکی وجہ سے شہریوں کی عید پھیکی پڑ گئی،عید کے پہلے روز شام کو ہونے والی بارش کے باعث کوٹ ادو کے تمام علاقوں میں6گھنٹے تک بجلی بند رہی جبکہ ٹرو کے روز صبح 7بجے سے دن 1بجے تک بجلی بند رہی،تینوں روز وفقے وقفے سے ٹرپنگ کا سلسلہ بھی جاری رہا، کوٹ ادو کے دیہی علاقوں میں عیدوں کے تینوں روز10سے12گھنٹے لوڈ شیڈنگ ہو تی رہی۔ ٹھٹھہ صادق آباد سے نمائند ہ پاکستان کے مطابق عید ایام میں بجلی لوڈشیڈنگ نہ کرنے کے دعوں کے باوجود ٹھٹھہ صادق آباد ونواح میں اولڈ مخدوم رشید،علی شیر واہن فیڈرز پر واپڈاسکینڈ جہانیاں کی طرف سے بجلی کی بدترین غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری رکھا گیا،عیدکے تینوں ایام کے دوران غیر اعلانیہ بجلی لوڈشیڈنگ سے عوام کو شدید مشکلات کا سامناکرنا پڑا ،بجلی لوڈشیڈنگ کے خلاف شہریوں،تاجروں نے واپڈاکیخلاف احتجاج بھی کیاگیا۔بدھلہ سنت سے نامہ نگار بدھلہ سنت اور اسکے گردونواح میں عید کے تینوں ایام میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ نہ کرنے کے حکومتی دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے اور بجلی کی لوڈ شیڈنگ بھی جاری رہی اور بجلی شدید گرمی کے باوجود بار بار ٹرپ بھی کرتی رہی جسکی وجہ سے شہرے بلبلا اٹھے اور حکومت کو کوستے نظر آئے ۔کلر والی سے نامہ نگار کے مطابق حکومت نے چاند رات سے لے کر عید کے تینوں روز بجلی کی لوڈشیڈنگ نہ کرنے کا اعلان کیا تھا مگر کلروالی اور گردونواح میں چاند رات سمیت عید کے تینوں روز بجلی کی آنکھ مچولی جاری رہی اور بجلی مسلسل چھ چھ گھنٹے غائب رہے اور عوام قیامت خیز گرمی میں بلبلاتے رہے اور حکومت کو صلواتیں اور کھری کھری سناتے رہے عوام الناس کے مطابق حکومت کی کرپشن کی وجہ سے اداروں پر رٹ ختم ہوتی جارہی ہے ادارے من مانی میں مصروف ہیں۔ صادق آباد سے نامہ نگار، تحصیل رپورٹر کے مطابق صادق آباد میں بجلی کی لوڈشیڈنگ کے ساتھ ساتھ وولٹیج کی کمی سے عوام الناس کے گھروں میں عید کی خوشیاں پھیکی پڑگیں وولٹیج کی کمی سے فریزر نہ چل سکے جبکہ بعض علاقوں میں بجلی کی ٹرپنگ جاری رہی صادق آباد کے شہریوں نے اس سلسلے میں بجلی کی بحالی اور وولٹیج کی کمی کو دور کرنے کیلئے ایم این اے سردار ارشد خان لغاری،اور آصف خان لغاری سے بھی رابطہ کیا جن کی مداخلت سے مختلف علاقوں میں بجلی کی بحالی ممکن ہوسکی جبکہ ایس ڈی او سٹی اور لائن سپریٹنڈنٹ چوہدری شاہد کی جانب سے عوام کے مسائل کے حل کیلئے اقدامات نہ اٹھائے جانے پر عوام الناس اور میپکو صارفین ایکسئین میپکو شیخ عبدالعزیز سے رابطے میں رہے جنھوں نے بھرپور طریقے سے بجلی کی بحالی کیلئے اپنا کردار ادا کیا مگر دوسری جانب صادق آباد کے عوام نے بجلی کی مسلسل اور پورے وولٹیج کے ساتھ فراہمی کا مطالبہ کیاہے واضح رہے کہ وولٹیج کی کمی سے عوام الناس کے فریزروں میں رکھے ہوئے سامان کو خراب ہونے کی صورت میں گلیوں میں پھینکنا پڑا ۔سیت پور سے نمائندہ پاکستان کے مطابق وزیر اعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف نے اعلان کیا تھا کہ عید کی وجہ سے 25سے27جون تک لوڈ شیڈنگ نہیں کی جائے گی لیکن ایس ڈی او واپڈا سب ڈویژن خیر پور سادات عمر فاروق نے وزیر اعظم کا حکم ہوا میں اڑاتے ہوئے 18گھنٹے کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ جاری رکھا ،چاند رات کو پوری رات بجلی بند رہی جبکہ عید کے روز گرمی اور حبس اور اوپر بجلی کی لوڈشیڈنگ کی وجہ سے عید نماز پڑھتے ہوئے منظور حسین گرڑہ بے ہوش ہو کر گر پڑا جسے فوری طور پر تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال علی پور لے جایا گیا لیکن وہ راستے میں ہی دم توڑ گیا اس کے علاوہ عید نماز کا خطبہ دیتے ہوئے جامع مسجد غوثیہ سیت پور کا خطیب مولانا فیض فرید غوری بے ہوش ہو کر گر پڑا دوسرے خطیب نے عید کا خطبہ مکمل کیا ان کے علاوہ درجنوں افراد گرمی کی وجہ سے بے ہوش ہو گئے ،ایس ڈی او واپڈا عمر فاروق کے رویہ کے خلاف شدید احتجاج کرتے ہوئے وزیراعظم پاکستان سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے ۔

لوڈشیڈنگ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -