ماں چھٹیوں کے بہانے پورے شہر میں شراب کے نشے میں دھت برہنہ گھومتی رہی اور چھوٹے چھوٹے بچے ’بھیک‘ مانگنے پر مجبور

ماں چھٹیوں کے بہانے پورے شہر میں شراب کے نشے میں دھت برہنہ گھومتی رہی اور ...
ماں چھٹیوں کے بہانے پورے شہر میں شراب کے نشے میں دھت برہنہ گھومتی رہی اور چھوٹے چھوٹے بچے ’بھیک‘ مانگنے پر مجبور

  

میڈرڈ (نیوز ڈیسک) اہل مغرب کی اخلاقی پستی کے قصے آپ نے بہت سنے ہوں گے لیکن ایک برطانوی لڑکی اپنے دو بچوں کے ساتھ سپین کی سیر کو گئی تو وہاں بے حیائی اور اپنے ہی ننھے بچوں کے ساتھ سفاکانہ سلوک کی ایسی داستان رقم کر دی کہ جس کا ایک ایک حرف انسانیت کا سر شرم سے جھکانے کے لئے کافی ہے۔

میل آن لائن کے مطابق کنیری آئی لینڈ کی پولیس کا کہناہے کہ انہیں ایک فلیٹ میں بھوکے پیاسے اور غلاظت میں لت پت دو بچے ملے جن کی عمریں 2 اور 4سال ہیں۔ گرین کیناریہ کے جنوب مغرب میں واقع تفریحی مقام موگان کے فلیٹ میں پولیس مقامی افراد کی شکایت پر رات کے آخری پہرپہنچی تھی۔ وہاں پہنچتے ہی پولیس کو معلوم ہو گیا کہ ننھے بچے کس قدر بھوکے تھے۔ بڑا بچہ آتے جاتے لوگوں سے کھانے کی بھیک مانگ رہا تھا جبکہ چھوٹی بچی اپنے جھولے میں نیم مردہ پڑی تھی۔ یہ انکشاف مزید دردناک تھا کہ ان کی ماں انہیں بے یارومددگار چھوڑ کر نشے میں دھت ہوکر سڑکوں پر برہنہ حالت میں گھوم رہی تھی۔

پولیس کا کہناتھاکہ لڑکی برطانوی شہری ہے اور چھٹیاں منانے کے لئے برطانیہ سے سپین آئی تھی۔ لوگوں نے اسے برہنہ حالت میں سڑکوں پر گھومتے دیکھ کر پولیس کو اطلاع کی تھی۔ پولیس نے بتایا ہے کہ چھوٹی بچی جھولے میں پڑی بھوک سے بلبلا رہی تھی اور اس کے جسم سے لپٹی غلاظت سے اندازہ لگایا جاسکتاتھا کہ کئی گھنٹوں سے اس کی خبرنہیں لی گئی تھی۔ چار سالہ بچہ بھی بری طرح رورہاتھا اور کھانا مانگ رہاتھا۔ دونوں بچے اب اپنے نانا کے پاس ہیں جبکہ ان کی ماں پولیس کی تحویل میں ہے ۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -