ہاتھیوں کے غول نے جیسے ہی اس چیز کو چھوا تو سب کے سب اچانک ہلاک ہوگئے، یہ کیاچیز تھی؟انتہائی افسوسناک خبرآگئی

ہاتھیوں کے غول نے جیسے ہی اس چیز کو چھوا تو سب کے سب اچانک ہلاک ہوگئے، یہ ...
ہاتھیوں کے غول نے جیسے ہی اس چیز کو چھوا تو سب کے سب اچانک ہلاک ہوگئے، یہ کیاچیز تھی؟انتہائی افسوسناک خبرآگئی

  

نئی دلی (نیوز ڈیسک) ہاتھی کا شمار ان معدودے چند جانوروں میں ہوتا ہے جنہیں جنگل میں کسی بھی اور جانور سے خطرہ نہیں ہوتا لیکن ان کی بدقسمتی کہ جنگلوں میں انسان بھی پائے جاتے ہیں۔ بھارت کے جنگلی علاقوں میں بھی انسانوں نے کچھ ایسی خطرناک سرگرمیاں شروع کر رکھی ہیں جو ہاتھیوں کے لئے موت کا پیغام ثابت ہو رہی ہیں۔

میل آن لائن کے مطابق بھارتی ریاست کرناٹکا کے ضلع کوڈاگو میں چائے کے باغات کے کنارے ایک نر اور مادہ ہاتھی اوران کے دوبچے مردہ حالت میں پائے گئے ہیں۔ وائلڈ لائف انسپکٹروں کے مطابق یہ جانور جیسے ہی چائے کے باغات کو محفوظ بنانے کے لیے لگائی گئی تاروں کے ساتھ چھوئے تو ان میں موجود طاقتور کرنٹ کی وجہ سے موقع پر ہی ہلاک ہوگئے۔

مقامی پولیس کے مطابق اس علاقے میں کاشتکار عموماً اوپر سے گزرنے والی ہائی وولٹیج تاروں پر کنڈے ڈال کر اپنے کھیتوں کے گرد موجود ننگی تاروں میں بجلی چھوڑ دیتے ہیں۔ کھیتوں کے گرد باڑ بنانے کے لیے عموماً بانس زمین میں گاڑ کر ان کے اوپر سے تاریں گزاری جاتی ہیں لیکن بانسوں کے جھک جانے یا ٹیڑھے ہونے کی وجہ سے تاریں زمین کے بے حد قریب ہوجاتی ہیں اور حادثات کا سبب بنتی ہیں۔

رواں ماہ کے آغا زمیں بھی اس علاقے میں دو ہاتھی بجلی لگنے سے مارے جاچکے ہیں۔ ایک اندازے کے مطابق گزشتہ چند سالوں کے دوران 200سے زائد ہاتھی اسی طرح ہلاک ہوچکے ہیں۔ریاست کرناٹکا میں بجلی سے ہاتھیوں کی ہلاکت کے سب سے زیادہ واقعات پیش آتے ہیں۔اخباردی گارڈین کے مطابق کرناٹکا میں شکاری اتنے ہاتھی ہلاک نہیں کرتے جتنے کرنٹ لگنے سے مرجاتے ہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -