انتخابات کو غیر شرعی قراردینا کسی صورت درست نہیں، نیاز حسین نقوی

انتخابات کو غیر شرعی قراردینا کسی صورت درست نہیں، نیاز حسین نقوی

  



لاہور (سٹی رپورٹر) وفاق المدارس الشیعہ پاکستان اور ملی یکجہتی کونسل کے مرکزی نائب صدر علامہ سید نیاز حسین نقوی نے کہا ہے کہ انتخابات شرعی عمل ہے ، اسے غیر شرعی قراردینا کسی صورت درست نہیں۔ ہر ملک کا آئین ہوتا ہے۔ جنگل کے معاشرے میں تو ہم نہیں رہ سکتے۔ اور معاشرے کو چلانے کے لئے حکومت کی تشکیل لوگوں کی رائے اور مشاورت سے ہوتی ہے۔ جس کا طریقہ انتخابات سے بہتر نہیں ہوسکتا۔ امیرالمومنین حضرت علی علیہ السلام کا ارشاد مبارک ہے کہ حاکم اور امیر کا ہونا لازم ہے، چاہے برا ہو یا نیک۔ پانچ سال بعد پاکستانی عوام کو اپنے نمائندوں کے ا نتخاب اور احتساب کا موقع ملا ہے۔ انہیں چاہیے کہ وہ بہترامیدواروں اور جماعتوں کے حق میں ووٹ دیں۔

حکومت سازی میں ووٹ دینا اچھا شہری ہونے کی علامت کے ساتھ اس جماعت اور امیدوار کی پالیسیوں کی حمایت بھی ہوتی ہے۔ اس لئے عوام سوچ سمجھ کر یہ اقدام کریں ، بہتر امیدواروں کا انتخاب کریں جو اسلام اور پاکستان کے مفاد میں ہواور جو لو گ انتخابی عمل کو غیر شرعی قراردیتے ہیں۔ ان کی رائے درست نہیں۔ بانی انقلاب اسلامی حضرت امام خمینی رحمتہ اللہ علیہ نے ایران میں انقلاب اسلامی کے بعد ووٹ کے ذریعے آئین تشکیل دیا اوراسلامی حکومت قائم کی۔ جبکہ پاکستان میں شہید قائد ملت جعفریہ علامہ عارف حسین الحسینی رحمتہ اللہ علیہ نے 1987ء کی قرآن و سنت کانفرنس میں علما کی مشاورت سے عملی سیاست میں آنے کا اعلان کر کے ثابت کیا کہ امور مملکت میں شمولیت کے لئے سیاست اور انتخاب کا راستہ اختیارکرنا عین شرعی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وفاق المدارس الشیعہ کسی خاص جماعت کی حمایت نہیں کرسکتا۔ کیونکہ کسی کا بھی منشورسو فیصد اسلامی نہیں اور اگر منشور ٹھیک ہے تو ان کا طرزعمل اطمینان بخش نہیں۔علماء کرام کو چاہیے کہ عوام کی راہنمائی کریں کہ موجود امیدواروں میں سے بہتر کی حمایت کریں جو ان کے حلقے اور ملک کے مفاد میں ہو۔

مزید : میٹروپولیٹن 4