منشیات اور نفسیاتی امراض کی مزید5علاج گاہیں بند ، 74افراد بازیاب

منشیات اور نفسیاتی امراض کی مزید5علاج گاہیں بند ، 74افراد بازیاب

  



لاہور(جنرل رپورٹر)پنجاب ہیلتھ کیئر کمیشن نے منشیات ونفسیاتی امراض کی علاجگاہوں کے خلاف جاری کارروائی کے دوران گزشتہ روز74افراد کوبازیاب کرکے پانچ مراکز کوبند کردیا۔تفصیلات کے مطابق کمیشن کی ٹیموں نے لیاقت ہسپتال لاہور میں 21افراد، ملتان میں لائف کیئر ہسپتال ،نشان ریہیب ہسپتال اور نجات سنٹر سے بالترتیب 15،10 اور چھ افراد کو بازیاب کر کے ان مرا کز کو بند کر دیا۔منڈی بہاؤ الدین میں واقع امیدِبہار ٹریٹمنٹ سنٹر میں 28افراد کو حبسِ بے جا سے رہائی دلوا کر مرکز کوبھی سیل کر دیا۔ ان افراد کو بدترین رہائشگاہ میں رکھا گیا تھا۔ مزید برآں ان تما م مراکز میں نہ ہی ماہر نفسیات تھا نہ کو ڈاکٹر ایمرجنسی کی سہولت برائے نام تھی۔ ان علاج گاہوں میں افراد کوان کی مرضی کے بغیررکھا گیا تھا جو پاکستان مینٹل ہیلتھ ایکٹ کی خلاف ورزی ہے۔ علاوہ ازیں جیوے شاہ ڈائلیسسز سنٹرمنڈی بہاؤالدین ،جوکہ پنجاب ہیلتھ کیئر کمیشن کے ساتھ بطورجی پی کلینک رجسٹرڈ ہے،کو بند کر دیا گیا کیونکہ اس پر بغیر بلڈبنک،لیب اور مستند عملہ کے کام کیا جارہا تھا۔مزید برآں پانچ شہروں میں عطائیوں کے خلاف کارروائی کے دوران کمیشن نے مزید 76عطائیوں کے اڈے بندکر دیے گئے،جن میں گجرانوالہ میں 28،فیصل آباد میں 21، شیخوپورہ میں13 ،قصور میں نو اور لاہورمیں پانچ عطائیوں کے کاروبار بند کیے گئے۔کمیشن کی ٹیموں نے236علاج گاہوں پرچھاپے مارے اورریکارڈ کے مطابق ان میں سے82عطائیوں نے دوسرے کاروبار شروع کر دیے ہیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 1