بھارت کو پاکستان کے ساتھ احترام کا رشتہ رکھنا ہوگا، ناصر جنجوعہ

بھارت کو پاکستان کے ساتھ احترام کا رشتہ رکھنا ہوگا، ناصر جنجوعہ

  



اسلام آباد (آن لائن) قومی سلامتی کے سابق مشیر لیفٹیننٹ جنرل (ر) ناصر جنجوعہ نے کہا ہے کہ بھارت کو پاکستان کے ساتھ احترام کا رشتہ رکھنا ہوگا، صرف پاکستان ہی بھارت کو یورپ اور وسط ایشیاء سے جوڑ سکتا ہے، بھارت کیلئے سی پیک میں شامل ہوئے بغیر خطہ میں آزادانہ تجارت بہت مشکل ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعرات کو یہاں پاک انسٹی ٹیوٹ فار پیس سٹڈیز کے زیراہتمام 2روزہ بین الاقوامی کانفرنس بعنوان جیو اکنامک رابطہ اور جنوبی ایشیاء کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔دو روزہ کانفرنس کے آخری روزسیشن میں کانفرنس کی صدارت سابق مشیر قومی سلامتی لیفٹیننٹ جنرل (ر) ناصر جنجوعہ نے کی جبکہ ڈاکٹر یینگ پروفیسر ساؤتھ ایشیا یونیورسٹی ، ڈاکٹر شانتی ڈی سوزا اور پروفیسرڈاکٹر اشتیاق وائس چانسلر سرگودہا یونیورسٹی گفتگو میں مہمان خصوصی تھے۔شرکاء میں ملک بھر سے تعلیمی اور صحافتی و معاشی ماہرین افراد شریک ہوئے۔یہ کانفرنس پاک انسٹی ٹیوٹ فار پیس اسٹڈیز کے اس اقدام کا تسلسل تھا جس میں سی پیک اور خطے کے درمیان رابطوں کی بحالی کی مختلف جہتوں کا جائزہ لیا جارہا ہے۔ محمد عامر رانا ڈائرایکٹر پاک انسٹی ٹیوٹ فار پیس سٹڈیز نے سیشن کا آغاز کیا اور کانفرنس کے اغراض و مقاصد بیان کئے۔ لیفٹیننٹ جنرل (ر) ناصر جنجوعہ نے اپنی گفتگو میں غیر ملکی مہمانوں کا شکریہ ادا کیا۔انہوں نے کہا کہ کانفرنس کا عنوان اس وقت کی ضرورت ہے۔ رابطہ اور تعاون اس خطے کے ممالک کے لئے لازمی ہے، سیکورٹی اور اکانومی ایک ہی سکے کے دورخ ہیں، خطہ میں استحکام کا حصول ان دونوں کے بغیر ممکن نہیں ہے۔ جنوب ایشیاء تنہائی کا شکار نہیں ہے، ایشیاء میں دنیا کی کل آبادی کا 60 فیصد رہتا ہے، لہٰذا دنیا کا مرکز ایشیاء ہے، پاکستان کا جغرافیہ دنیا کی 86 فیصد آبادی کو آپس میں جوڑتا ہے۔دنیا کی تجارت کے تمام راستے پاکستان سے جاتے ہیں۔۔بھارت کو پاکستان کے ساتھ احترام کا رشتہ رکھنا ہوگا۔

مزید : علاقائی