سخاکوٹ ،مولانا گل نصیب کی نامزدگی پر احتجاجاً جمعیت کے سینئر امیر سالار سمیت درجنوں کارکن مستعفی

سخاکوٹ ،مولانا گل نصیب کی نامزدگی پر احتجاجاً جمعیت کے سینئر امیر سالار سمیت ...

  



سخاکوٹ( نمائندہ پاکستان) ملاکنڈ کے قومی نشست این اے 8پر ایم ایم اے کے صوبائی امیر مولانا گل نصیب خان کے نامزدگی پر جمعیت علماء اسلام ملاکنڈ کے ضلعی سینئیر امیر اور ضلعی سالار سمیت درجنوں کارکنوں نے بنیادی رکنیت سمیت اپنے عہدوں سے استعفٰی دینے کا اعلان کیایہ اعلان جے یو ائی کی طرف سے مولانا گل نصیب خان کے بحیثیت امیدوار کے نامزدگی کے اعلان کے بعد سخاکوٹ میں طلب کئے گئے جمعیت علماء اسلام کے کارکنوں کے اجلاس میں کیا گیا ۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ضلعی سینئیر امیر اور امیدوار این اے اٹھ اور پی کے انیس مولانا شمس الحق نے کہا کہ ہمارے اباؤ اجداد سو سال سے زائد جمعیت علماء اسلام سے وابستہ رہے ہیں اور ملاکنڈ میں جے یو ائی کے لئے ہر فورم پر بھر پور نمائندگی ادا کی جس کی وجہ سے جے یو ائی ضلع ملاکنڈ میں اپنی حیثیت پر بحال رہی لیکن افسوس کی بات ہے کہ جب بھی انتخابات اتے ہیں تو ملاکنڈ پر ایمپورٹڈ امیدوار مسلط کیا جاتا ہے جس کی وجہ سے پارٹی الیکشن ہار جاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ 2018الیکشن کے لئے ضلع بھر کے کارکنوں کے مشاورت کے بعد میں نے کاغذات نامزدگی جمع کرائی اور الیکشن کمپین سمیت تمام قانونی تقاضے پورہ کئے لیکن صوبائی امیر مولانا گل نصیب خان نے اپنے منصب کا ناجائز اختیارات استعمال کر کے ملاکنڈ کے کارکنوں کے حق پر ڈاکہ ڈالا جس سے کارکنوں نے وقتاً فوقتاً مرکزی امیر مولانا فضل الرحمان کو اگاہ کیا لیکن اس کے باوجود مولانا گل نصیب خان کے نامزدگی کا اعلان کیا گیا جس سے کارکنوں میں سخت مایوسی پھیل گئی اور ایم ایم اے کا ملاکنڈ سے یقینی جیت شکست میں تبدیل ہوگئی انہوں نے کہا کہ کارکنوں کے مرضی پر قومی اور صوبائی نشست پر ازاد حیثیت سے الیکشن لڑینگے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...