ڈاکٹر غازی گلاب جمال اورکزئی کا انتخابات سے دستبرداری کا اعلان

ڈاکٹر غازی گلاب جمال اورکزئی کا انتخابات سے دستبرداری کا اعلان

  



ہنگو(بیورورپورٹ)فاٹا کے سابق پارلیمانی لیڈر ڈاکٹر غازی گلاب جمال اورکزئی نے 2018 کے انتخابات سے دستبرداری کا اعلان کر دیا۔ پی ٹی آئی کی صوبائی لیڈر شپ کی طرف سے ٹکٹ کی یقین دہانی کرائی گئی بعد میں پی ٹی آئی نے این اے 33 ہنگو کا ٹکٹ حاجی خیال زمان کو دے دیا۔ دوسری سیاسی پارٹیوں نے بھی اُمیدوار بننے کی دعوت دی ہے۔ اخلاقاً کسی اور پارٹی سے الیکشن نہیں لڑ سکتا۔ میری ساری سیاست آزاد اور عوام کی خدمت کا حامل ہے۔ فاٹا کے لئے جو کچھ کیا اس کا ہر محاز پر ستائش کی جاتی ہے۔سیاست میں سے اخلاق، کردار اور اصول ختم ہوتے جا رہے جوکہ بہت بڑا المیہ ہے۔ سابق صوبائی وزیر غنی الرحمان کے بعد ہنگو میں کسی بھی منتخب نمائندے نے میگا پراجیکٹ منظور نہیں کرائیں۔ ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر غازی غازی گلاب جمال اورکزئی نے ہنگو پریس کلب میں ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ وہ دو بار اورکزئی ایجنسی سے رکن قومی اسمبلی منتخب ہوئے اور انہوں نے پارلیمنٹ میں قبائل کے حقوق کی بھر پور جنگ لڑی۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کے صوبائی قائدین نے مجھے ہنگو این اے 33 کا ٹکٹ دینے کا وعدہ کیا تھا اس لئے انہوں نے اورکزئی ایجنسی کے بجائے ہنگو سے کاغذات جمع کرائیں لیکن بعد میں پارٹی نے ٹکٹ سابق ایم این اے حاجی خیال زمان اورکزئی کو دیدیا ایسے میں مجھ سے دیگر سیاسی جماعتوں، علاقہ مشران اور مختلف حلقوں نے رابطہ کیا اور اپنے پلیٹ فارم سے مجھے انتخاب لڑنے کی دعوت بھی دی۔ چونکہ میں پی ٹی آئی ٹکٹ کا اُمیدوار تھا اس لئے اخلاقی طور پر کسی اور جماعت سے انتخاب لڑنا مناسب نہیں اس لئے میں نے رضا کارانہ طور پر انتخاب نہ لڑنے کا فیصلہ کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ سابق صوبائی وزیر حاجی غنی الرحمان نے ہنگو کو ضلع کا درجہ دلوایا پھر اس کے بعد ہنگو میں کوئی میگا پراجیکٹ شروع کیا نہ جا سکا۔ہنگو اس وقت بھی صوبے کے دیگر اضلاع کے مقابلے میں بہت پیچھے ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ کسی بھی امیدوار کی حمایت یا مخالفت نہیں کرتے۔ تا ہم ہنگو کے عوام سے اپیل ہے کہ وہ اُن امیدواروں کو کامیاب کرائیں جو ہنگو کو امن کا گہوارا دیکھنا چاہتے ہیں اور علاقے کی ترقی کے لئے سیاسی شعور رکھتے ہیں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...