جادو کے ذریعے نوجوان لڑکیوں کو جسم فروشی پر مجبور کرنے والی خاتون کی ناقابل یقین کہانی

جادو کے ذریعے نوجوان لڑکیوں کو جسم فروشی پر مجبور کرنے والی خاتون کی ناقابل ...
جادو کے ذریعے نوجوان لڑکیوں کو جسم فروشی پر مجبور کرنے والی خاتون کی ناقابل یقین کہانی

  



لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) لڑکیوں کو اغواءکرکے بیرون ملک سمگل کرنے اور جسم فروشی کے دھندے پر لگانے والے گروہوں کی خبریں تو آپ گاہے پڑھتے رہتے ہوں گے لیکن اب برطانیہ سے ایک ایسی خاتون کی حیران کن خبر سامنے آئی ہے جو جادو کے ذریعے لڑکیوں کو بیرون ملک جانے اور جسم فروشی کرنے پر مجبور کر دیتی تھی۔ میل آن لائن کے مطابق 53سالہ جوزفین لیامو نامی یہ خاتون بنیادی طور پر لندن کی رہائشی تھی لیکن اس نے نائیجیریا میں بھی ایک عالیشان گھر بنا رکھا تھا اور وہاں لگژری زندگی گزار رہی تھی۔

جوزفین نے باقاعدہ ایک نیٹ ورک بنا رکھا تھا اور ایک ماہر جادوگر کی خدمات حاصل کر رکھی تھیں۔ وہ لڑکیوں کو بہلا پھسلا کر لاتی اور جادوگر انہیں اپنے جادو کے ذریعے یورپی ممالک جانے اور جسم فروشی کرنے پر مجبور کر دیتا۔ جوزفین ان لڑکیوں سے بیرون ملک بھیجنے کے عوض30ہزار یورو(تقریباًساڑھے 42لاکھ روپے)سے 38ہزار یورو(تقریباً 54لاکھ روپے) وصول کرتی تھی۔ وہ آسان شکار ہونے والی لڑکیوں کوبلاتی اور انہیں جادو کیا گیا خون پلاتی جس میں ورمز (Worms) ہوتے تھے اور انہیں جادو کیے ہوئے مرغیوں کے دل کھلاتی۔ اس سے وہ لڑکیاں اس کے تابع ہو جاتیں۔

رپورٹ کے مطابق جوزفین کے تابع ہونے کے بعد لڑکیاں اسے رقم دیتیں اور خود یورپی ملک جا کر جسم فروشی پر آمادہ ہو جاتیں۔ انہیں سب سے پہلے لیبیا کے ساحلی علاقے تک پہنچایا جاتا اور وہاں انہیں اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا جاتا۔ا س کے بعد انہیں کشتی میں سوار کرکے اٹلی کے راستے جرمنی پہنچایا جاتا، جہاں انہیں مختلف قحبہ خانوں میں بھیج دیا جاتا۔ اب تک وہ سینکڑوں لڑکیوں کو سمگل کرکے اس شرمناک کام پر مجبور کرچکی تھی اور ان تمام کی عمریں 24سے 30سال کے درمیان تھیں۔کچھ عرصہ قبل ایک قحبہ خانے کے مالک کو جوزفین کی بھیجی ہوئی ایک لڑکی کی دستاویزات پر شبہ ہوا جس پر اس نے پولیس کو اطلاع دے دی۔ جب پولیس نے معاملے کی تحقیق کی تو وہ جوزفین تک پہنچ گئے اور اسے چند ماہ قبل نائیجیریا سے واپس لندن جاتے ہوئے ہیتھروایئرپورٹ پر گرفتار کر کے عدالت میں پیش کر دیا گیاجہاں اس کا جرم ثابت ہو گیا ہے اور اسے 4جولائی کو سزا سنائی جائے گی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /برطانیہ


loading...