فحش فلموں کی سب سے بڑی ویب سائٹ چلانے والی خاتون پکڑی گئی، یہ کون ہے؟ جان کر آپ بھی حیران پریشان رہ جائیں گے

فحش فلموں کی سب سے بڑی ویب سائٹ چلانے والی خاتون پکڑی گئی، یہ کون ہے؟ جان کر ...
فحش فلموں کی سب سے بڑی ویب سائٹ چلانے والی خاتون پکڑی گئی، یہ کون ہے؟ جان کر آپ بھی حیران پریشان رہ جائیں گے

  



سیئول (نیوز ڈیسک) منظم جرائم کی دنیا میں ہمیشہ سے جرائم پیشہ مردوں کی حکمرانی رہی ہے۔ خواتین کم ہی کبھی کسی جرائم پیشہ گروہ کی سرغنہ کے طور پر سامنے آئی ہیں لیکن جنوبی کوریا میں ایک خاتون نے یہ بھی کر دکھایا۔ یہ نا صرف ایک منظم مجرمانہ گروہ کی سربراہ نکلی بلکہ اس کا گروہ ایسے غلیظ جرم میں ملوث تھا کہ جس کے بارے میں جان کر ہی انسان کا سر شرم سے جھک جائے۔ یہ خاتون جنوبی کوریا کی سب سے بڑی فحش ویب سائٹ چلا رہی تھی اور برسوں کی بیرون ملک مفروری کے بعد بالآخر اسے گرفتارکرلیا گیا ہے۔

دی سٹار آن لائن کے مطابق ’سورا نیٹ‘ نامی ویب سائٹ کی بنیاد 1999ءمیں رکھی گئی اور اس پر لاکھوں کی تعداد میں ایسی ویڈیوز موجود تھیں جو خفیہ کیمروں سے بنائی گئیں جبکہ ایسی ویڈیوز کی بھی بہتات تھی جو کسی کو بدنام کرنے کی غرض سے پوسٹ کی گئی تھیں۔ جنوبی کوریا میں فحش فلموں کی ڈسٹری بیوشن جرم ہے تاہم غیر ملکی سرورز کے ذریعے بڑے پیمانے پر اس طرح کا مواد ملک میں دستیاب ہے۔

انسانی حقوق کی تنظیموں کی جانب سے بے پناہ شکایات موصول ہونے کے بعد دو سال قبل سورانیٹ کو بند کردیا گیا تھا اور اس کی بنیاد رکھنے والی خاتون کو گرفتار کرنے کی کوششیں جاری تھیں۔ سانگ نامی یہ خاتون نیوی لینڈ میں مقیم تھی لیکن گزشتہ ہفتے جب وہ جنوبی کوریا واپس آئی تو اسے گرفتار کرلیا گیا۔ سانگ کا خاوند بھی اس کے ساتھ شریک جرم ہے لیکن وہ آسٹریلوی شہریت رکھنے کے باعث تاحال گرفتار نہیں ہوسکا۔

حکام کا کہنا ہے کہ فحش ویب سائٹ پر ایسی ویڈیوز کی کثرت تھی جو عوامی ٹوائلٹس، کلاس رومز، چینجنگ رومز، سب ویز اور دیگر عوامی مقامات پر خفیہ کیمروں سے بنائی گئی تھیں۔ سب سے تشویشناک بات یہ تھی کہ اس ویب سائٹ پر بچوں کی فحش ویڈیوز بھی بڑی تعداد میں موجود تھیں۔ اس ویب سائٹ کے خلاف خصوصاً اس وقت بڑے پیمانے پر اشتعال پھیل گیا جب اس پر ریپ اور گینگ ریپ کی متعدد ویڈیوز پوسٹ کی گئیں، جن میں بچوں کے گینگ ریپ کی ویڈیوز بھی شامل تھیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /بین الاقوامی


loading...