مقبوضہ کشمیر، بچے کے قتل پر انسانی حقوق تنظیمیں چیخ اٹھیں، تحقیقات کا مطالبہ

    مقبوضہ کشمیر، بچے کے قتل پر انسانی حقوق تنظیمیں چیخ اٹھیں، تحقیقات کا ...

  

نئی دہلی(این این آئی)انسانی حقوق کی بین الاقوامی تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل نے مقبوضہ کشمیر میں ضلع اسلام آبادکے علاقے بجبہارہ میں بھارتی فوجیوں کے ہاتھوں ایک کمسن بچے کے قتل پر شدید رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ بچے کا بہیمانہ قتل انسانی زندگی اور انسانیت کے بنیادی اصولوں کی توہین ہے۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل انڈیاشاخ کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر اویناش کمار نے نئی دہلی میں ایک بیان میں کہا کہ حکام کو اس واقعے کی تحقیقات کرنی چاہئیں اور مجرموں کو انصاف کے کٹہرے میں لانا چاہئے۔شہریوں کا قتل کسی بھی صورت میں جائز نہیں ہوسکتا اوریہ 1949 کے چار جنیوا کنونشنز کے آرٹیکل 3 کی خلاف ورزی ہے۔انہوں نے بچے کی ہلاکت کی فوری تحقیقات اور ذمہ داروں کو پکڑ کر سخت کارروائی کا مطالبہ بھی کیا۔دوسری جانب بھارت نے دو سال قبل جعلی مقابلے میں شہید کیے جانے والے توصیف شیخ کے ضلع کولگام کے علاقہ رام پورہ میں گھر پر چھاپہ مار کر بہن رفیقہ کو گرفتار کرنے کی کوشش کی تاہم فوجی شہید کی والدہ کو اٹھا کر لے گئے۔ادھر کشمیر کونسل یورپ کے چیئرمین علی رضا سید نے بھی برسلز سے جاری ایک بیان میں ضلع اسلام آباد کے علاقے بجبہارہ میں بھارتی فوجیوں کے ہاتھوں کمسن بچے کے وحشیانہ قتل کی مذمت کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بین الاقوامی قوانین کے مطابق بچوں، خواتین اور بزرگ لوگوں کوہرقسم کے جنگ میں تحفظ دیاگیاہے لیکن بھارت کو انسانی حقوق کے بین الاقوامی قوانین کی پرواہ نہیں ہے۔ مقبوضہ کشمیر میں کمسن بچے کا قتل ریاستی دہشت گردی کی بدترین مثال ہے۔علاوہ ازیں مقبوضہ کشمیر میں بھارتی پولیس نے ضلع کشتواڑ میں معروف آزادی پسند رہنما جہانگیر سروری سمیت ایک درجن سے زائد افراد کے خلاف چارج شیٹ داخل کردی ہے۔کشمیرمیڈیا سرو س کے مطابق چارج شیٹ اس سال کے اوائل میں دچھن پولیس اسٹیشن میں درج ایک جھوٹے مقدمے کے سلسلے میں جموں کے ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کی ٹاڈا عدالت میں د اخل کی گئی ہے۔چارج شیٹ میں جہانگیر سروری، مدثر حسین اور ریاض احمد کو مجاہدین قراردیا گیا ہے جبکہ 10 دیگر افراد پر تحریک آزادی کی حمایت کرنے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔سرووری کشتواڑ میں مزاحمتی رہنما ہیں جو گزشتہ 30 سے زیادہ عرصے سے سرگرم ہیں۔دریں اثناء بھارتی فوجیوں نے پیراملٹری فورسز، اسپیشل آپریشن گروپ اور وی ڈی سی کے ہمراہ کشتواڑ، ڈوڈہ، رامبن، راجوری، پونچھ اور جموں خطے کے دیگر مسلم اکثریتی علاقوں میں محاصرے اورتلاشی کی کارروائیاں جاری رکھیں۔

انسانی حقوق

مزید :

صفحہ اول -