جعلی ڈگریاں اور لائسنس، ویتنام بھی 20پاکستانی پائلٹس و عملہ گراؤنڈ کر دیا

جعلی ڈگریاں اور لائسنس، ویتنام بھی 20پاکستانی پائلٹس و عملہ گراؤنڈ کر دیا

  

کراچی(این این آئی)ویتنام کی سول ایوی ایشن کے حکام نے مبینہ جعلی لائنسس اسکینڈل سامنے آنے کے بعد متعلقہ وزارت کی ہدایت پر پاکستان سے تعلق رکھنے والے کم از کم 20 پائلٹس کو معطل کردیا۔ رپورٹ کے مطابق ویتنام کی سول ایوی ایشن (سی اے اے وی) کے ڈائریکٹر ڈنھویٹ تھنگ نے کہا کہ یہ فیصلہ وزارت ٹرانسپورٹ کی ہدایت پر دو روز قبل کیا گیا تھا۔ تقریباً 20 پائلٹس کو معطل کردیا گیا ہے اور یہ تمام پاکستان کے شہری تھے اور پاکستان سے ہی لائسنس حاصل کیا تھا،یہ پائلٹس گزشتہ کئی برس سے ویتنام میں کام کر رہے تھے۔سی اے اے وی کے ایگزیکٹو کے مطابق ہمیں پاکستانی سول ایوی ایشن حکام کی جانب سے جائزہ رپورٹ کا انتظار ہے جس میں طے ہوگا کہ آیا ان پائلٹس نے جعلی لائسنس حاصل کیا تھا یا نہیں۔انہوں نے کہا کہ جن پائلٹس کے پاس مصدقہ لائسنس ہوگا انہیں دوبارہ کام کرنے کی اجازت ہوگی۔خیال رہے کہ پاکستان حکام کی جانب سے گزشتہ روز کہا گیا تھا کہ 860 پاکستانی پائلٹس میں سے 260 کے پاس مشکوک لائسنس ہیں، تاہم ان کی چھان بین کی جارہی ہے۔دوسری جانب وزارت ہوا بازی نے مشتبہ پائلٹس کی فہرست میں حویلیاں طیارے حادثے میں جاں بحق ہونے والے کپتان کا نام بھی شامل کردیا۔ نجی ٹی وی کے مطابق وزارت ہوا بازی کی مشتبہ پائلٹس کی لسٹ میں کئی بڑی غلطیاں کی گئیں، وزارت ہوا بازی کی مرتب کردہ مشتبہ لائسنسز کی فہرست میں پائلٹس کے پرسنل نمبروں کی عدم موجودگی سمیت ریٹائر ہو جانے والے پائلٹس کے نام اور دیگر کئی غلطیاں بھی موجود ہیں۔وزارت ہوابازی نے مشتبہ پائلٹس کی فہرست میں حویلیاں طیارہ حادثے کے جاں بحق کپتان کا نام بھی شامل کرلیا ہے۔ ایوی ایشن کی فہرست میں نمبر 23 پر کپتان صالح یار جنجوعہ کا نام درج ہے۔نجی ٹی وی کے مطابق مشتبہ پائلٹس کی فہرست میں جاں بحق فرسٹ آفیسر احمد منصور جنجوعہ کا نام بھی شامل ہے، فرسٹ آفیسر احمد منصور حویلیاں میں تباہ اے ٹی آر طیارے میں جاں بحق ہوئے تھے جو احمد منصور جنجوعہ پبلک پرائیوٹ لائسنس (پی پی ایل) کے حامل کپتان تھے۔

پائلٹس معطل

مزید :

صفحہ اول -