کھیلوں کے سامان کی برآمدات میں 30فیصد کمی

کھیلوں کے سامان کی برآمدات میں 30فیصد کمی

  

اسلام آباد (اے پی پی) کھیلوں کے سامان کی برآمدات میں 30 فیصد تک کمی ہوئی ہے۔ کھیلوں کا سامان تیار کرنے والی صنعت بحالی کیلئے جدوجہد کررہی ہے۔ برآمدات میں کمی سے 25 فیصد کارکنوں کا روزگار ختم ہوا ہے اور اگر صورتحال چند ماہ اور جاری رہی تو مزید 25 فیصد کا رکن روزگار سے ہاتھ دھو بیٹھیں گے۔ پاکستان سپورٹس گڈز ایسوسی ایشن (پی ایس جی اے) سابق صدر حسین چیمہ اور وژن ٹیکنالوجیز کے سی ای او احسن نعیم چیمہ نے اپنے ایک مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ کووڈ۔19 کی وباء کے باعث برآمدی آرڈرز کی معطلی اور منسوخی کی وجہ سے کھیلوں کا سامان تیار کرنے والی صنعت کے گودام تیار مال سے بھرے پڑے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ تین ماہ کے دوران برآمدی آرڈرز کی وصولی میں 70 فیصد کمی ہوئی ہے تاہم یورپ میں چند فٹ بال لیگز اور کرکٹ لیگز کی بحالی سے بہتری کے امکانات پیدا ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ صنعت بحالی کیلئے جدوجہد کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ چند ماہ کے دوران کھیلوں کے سامان کی برآمد ایک ارب ڈالر کے مقابلہ میں 700 ملین ڈالر تک کم ہوئی ہے۔ صنعتی سرگرمیوں میں کمی کے باعث صنعت سے وابستہ 25 فیصد ورکرز کا روزگار ختم ہوا ہے اور اگر آئندہ دو تین ماہ تک صورتحال بہتر نہ ہوئی تو کھیلوں کا سامان تیار کرنے والی صنعت سے وابستہ مزید 25 فیصد کارکن بے روزگار ہونے کا خدشہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں تیار کیا جانے والا کھیلوں کا سامان دنیا بھر کے ممالک کو برآمد کرکے زرمبادلہ کمایا جاتا ہے تاہم کورونا وائرس کی عالمی وباء کے باعث کھیلوں کا سامان تیار کرنے والی مقامی انڈسٹری مشکلات کا شکار ہے اور بحالی کی سحت جدوجہد کررہی ہے۔

مزید :

کامرس -