شرح سود میں کمی خوش آئند ہے،کارپٹ مینوفیکچرز

شرح سود میں کمی خوش آئند ہے،کارپٹ مینوفیکچرز

  

کراچی /لاہور(این این آئی)پاکستان کارپٹ مینو فیکچررز اینڈ ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن نے شرح سود میں مزید ایک فیصد کمی کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ موجودہ حالات میں اسے 4سے 5فیصد تک لایا جائے،اس اقدام سے نئی سرمایہ کاری کو فروغ ملے گا اور خصوصاً مینو فیکچرننگ گروتھ میں اضافہ ہوگا جس کے مجموعی معیشت پر مثبت اثرات مرتب ہوں گے، حکومت پاکستانی روپے پر بڑھتے ہوئے دباؤ کو کم کرنے کیلئے سنجیدہ اقدامات اٹھائے،برآمدات میں اضافے کیلئے موثر پالیسی کا اعلان اور اس پر عملدرآمد نا گزیر ہو چکا ہے۔ ان خیالات کا اظہار ایسوسی ایشن کے چیئرمین محمد اسلم طاہر نے سرکلز کے مشترکہ اجلاس سے ویڈیو لنک کے ذریعے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر چیئر پرسن کارپٹ ٹریننگ انسٹی ٹیوٹ پرویز حنیف، وائس چیئرمین شیخ عامر خالد، سینئر مرکزی رہنما عبداللطیف ملک، سینئر ممبر ریاض احمد،سعید خان، اعجا ز الرحمان،محمد اکبر ملک، میجر (ر) اخترنذیر اوردیگر بھی موجود تھے۔اجلاس میں رواں سال کارپٹ ایسوسی ایشن کی سالانہ نمائش کے انعقاد کے حوالے سے بھی غور وخوض کیا گیا۔محمد اسلم طاہر نے کہا کہ اسٹیٹ بینک کی جانب سے حالیہ چند ماہ میں شرح سود میں خاطر خواہ کمی کی گئی ہے جس کے حوصلہ افزاء نتائج برآمد ہوئے ہیں۔ کورونا وائرس کی وجہ سے جس طرح کے حالات پیدا ہو چکے ہیں ایسے میں 7فیصد شرح سود کے ساتھ سرمایہ کاری کو فروغ نہیں دیا جا سکتا۔

اس لئے شرح سود کو 4سے5فیصد پر لایا جائے جس سے صنعتی اور کاروباری سر گرمیوں کو عروج حاصل ہوگااورمجموعی معیشت پر مثبت اثرات مرتب ہوں گے۔ اجلاس میں پاکستانی روپے پر بڑھتے ہوئے دباؤ پر شدید تشویش کا اظہار کرتے حکومت سے مطالبہ کیا گیا کہ موجودہ حالات میں زر مبادلہ کے ذخائر کو مستحکم رکھنا نا گزیر ہے، حکومت برآمدات کے فروغ کے لئے موثر پالیسی کا اعلان کرے جس میں عالمی منڈیوں میں پیدا ہونے والے نئے رجحانات کو پیش نظر رکھا جائے، برآمدی شعبوں کیلئے مزید آسانیاں پیدا کر کے مرعات دی جائیں تاکہ برآمدات میں اضافہ کیا جا سکے۔

مزید :

کامرس -