پٹرولیم مصنوعات میں اضافہ ملکی ترقی میں رکاوٹ کا باعث ہو گا: حبیب الرحمان

    پٹرولیم مصنوعات میں اضافہ ملکی ترقی میں رکاوٹ کا باعث ہو گا: حبیب الرحمان

  

لاہور(این این آئی)ایران پاک فیڈریشن آف کلچر اینڈ ٹریڈ کے صدر خواجہ حبیب الرحمان نے کہا ہے کہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں یکمشت تقریباً33فیصد اضافے سے پیداواری لاگت بڑھنے سے پاکستانی مصنوعات عالمی منڈیوں میں مقابلے کی دوڑ سے باہر ہو جائیں گی،پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے ساتھ ہی اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں 5سے 7فیصد تک اضافہ ہو گیا ہے اور اس کے آفٹر شاکس بھی آئیں گے۔ ان خیالات کا اظہارا نہوں نے اپنی رہائشگاہ ملاقات کے لئے آنے والے صنعتکاروں کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ خواجہ حبیب الرحمان نے کہا کہ اسٹیٹ بینک کی جانب سے شرح سود میں کمی سے مینو فیکچرننگ کے شعبے کو عروج حاصل ہونے کا امکان پیدا ہوا تھا لیکن حکومت نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں بے پناہ اضافہ کر کے اس میں رکاوٹ پیدا کر دی ہے۔پاکستانی کرنسی کو استحکام دینے کیلئے ہمیں برآمدات میں اضافہ کرنا ہوگا لیکن ایسے حالات میں برآمدات میں اضافہ تو دور ہم عالمی منڈیوں سے مقابلے کی دوڑ سے ہی باہر ہو جائیں گے۔ خواجہ حبیب الرحمان نے کہا کہ حکومت فی الفور اپنے فیصلے پر نظر ثانی کرے اور قیمتوں میں کمی کی جائے تاکہ کورونا وائرس کی وجہ سے مشکلات سے دوچار معیشت کو سانس مل سکے۔ انہوں نے وفد کو یقین دہانی کرائی کہ اس سلسلہ میں متعلقہ حکومتی شخصیات کو خط ارسال کئے جائیں گے جس میں پیٹرولیم اور بجلی کی قیمتوں میں کمی کے مطالبے کے ساتھ معیشت کی بہتری کے لئے تجاویز سے بھی آگاہ کیا جائے گا۔

مزید :

کامرس -