ن لیگ سندھ کا پٹرول کی قیمتوں میں اضافے کی تحقیقات کا مطالبہ

      ن لیگ سندھ کا پٹرول کی قیمتوں میں اضافے کی تحقیقات کا مطالبہ

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)پاکستان مسلم لیگ ن سندھ کے نائب صدر و سابق رکن قومی اسمبلی صاحبزادہ شبیر حسن انصاری نے کہا ہے کہ وفاقی حکومت کی جانب سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اچانک اضافہ عوام دشمن اقدام ہے، پٹرول عالمی منڈی میں کوڑیوں کے بھاؤ بک رہا تھا تب بھی ہمارے ملک میں پٹرول کے نرخ سو روپے فی لیٹر سے زیادہ تھے، لاک ڈاؤن میں جب پٹرولیم مصنوعات کی طلب میں کمی ہوئی تو حکومت نے نرخوں میں کمی کی لیکن پٹرول کمپنیوں نے پٹرول پمپس پر سیل ہی بند کردی اور عوام پٹرول کے لیے دربدر ہوگئی، ان خیالات کا اظہار انہوں نے مسلم لیگ ن ہاؤس کراچی سے جاری کردہ بیان میں کیا، شبیر حسن انصاری کا کہنا تھا کہ جیسے ہی پٹرول کے نرخوں میں کمی ہوئی پٹرولیم کمپنیوں نے پٹرول نایاب کرد یا جبکہ کمپنیوں کے کروڑوں لیٹر کا اسٹاک موجود تھا پٹرول کی مصنوعی قلت پیدا کرنے پر وفاقی حکومت نے پٹرولیم کمپنیوں کو ایک کروڑ روپے جرمانہ کیا جو ان کے ایک دن کے جیب خرچ سے بھی کم ہے، عوام کو بتایا جائے کہ اس ٹیکنیکل گیم سے کس کو فائدہ پہنچایا گیا، انہوں نے کہا کہ دوسرے ممالک بنگلہ دیش اور سری لنکا کی مثالیں دیکر عوام کو بے وقوف نہ بنایاجائے، عمران خان کے اپنے ہی الفاظ ہیں کہ اگر مہنگائی کی شرح اوپر جائے تو سمجھ جاؤ کہ حکمران چور ہیں، وفاقی حکومت پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں غیر قانونی اضافے پر جھوٹے اور بے بنیاد دلائل دیکر اپنی نا اہلی کو چھپانے کی کوشش کر رہی ہے، عالمی منڈی میں پٹرول رل رہا ہے اور پاکستان میں مہنگا ہورہا ہے، انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت عوام کی خیرخواہ نہیں ہے یہ لوگ حکومت چلانے کے اہل نہیں ہیں اس وقت کوئی شعبہ ایسا نہیں ہے جہاں حکومت نے اپنی نا اہلی کے ریکارڈ نہ بنائیں ہوں، عوام اب تحریک انصاف اور عمران خان سے تنگ آ چکے ہیں، پٹرولیم مصنوعات میں اچانک ہوشربا اضافے سے عوام میں وفاقی حکومت کی جانب سے پھیلی مایوسی میں مزید اضافہ ہوا ہے، اچانک سے پٹرول کے نرخوں میں اضافہ کر کے پٹرول مافیا کو فائدہ پہنچایا گیا جیسے پہلے وفاقی حکومت نے چینی اور گندم مافیا کو اربوں کھربوں کا فائدہ پہنچایا۔

مزید :

صفحہ آخر -