پاکستان میں اس وقت دو قانون رائج ہیں، محمد اسلم خان

  پاکستان میں اس وقت دو قانون رائج ہیں، محمد اسلم خان

  

کراچی (پ ر) پاکستان میں دو قانون ایک فرزندان زمین کے لیے اور دوسرا غیر فرزندان زمین انٹلیکچوؤل فورم آف پاکستان کا اجلاس آن لائن منعقد ّکیا گیا جس اراکین فورم نے مختلف معاملات اور خاص کر2 جون 2020کوڈومیسائل اور پی آر سی کے خلاف کبوتر چوک ہائی کورٹ ریڈ زون سندھ اسمبلی کے سامنے آڑ ایس ایس اور سندھ کے علیحدگی پسند سندھی قوم پرستوں کی سپورٹ پر اجازت کے بغیر مظاہرہ کرنے اور اس میں ڈومیسائل پر کم اور پاکستان کے پنجابی پٹھان بلوچی سرائیکی بنگالی گلگتی مہاجروں اور پاکستان کی حمایت کرنے والے سندھیوں کے خلاف ایک طاقت ور اسپیکر پر کورونا کے لاک ڈاؤن اور دفعہ 144 کی خلاف ورزی پر جو غلیظ زبان استعمال کی گئی، اس پر غورکیا جو پاکستان کے تمام مقتدر اداروں کو معلوم ہے،اور جو لوگ اشتعال انگیز تقریر وں میں سے کچھ لوگوں کو بھاگنے کا موقع دیا گیا اور جن لوگوں کے خلاف ایف آئی آر نمبر 2020/218 کا ٹ کر گرفتار کیا گیا،ان کو چیک کیا جائے تو ان کی ایف آئی آر دوسرے تھانوں میں ہو گی، ان کو رات دو بجے بغیر سی آر او کے ذاتی مچلکے پر گورنمنٹ کی ہائر اتھارٹی کے کہنے پر رہا کر دیا گیا۔رات دو بجے کہا کہ ثبوت نا کافی ہیں اور رپورٹ عدالت میں داخل کر دی گئی اور دوسری طرف کورونا لاک ڈاون میں دفعہ 144 کی خلاف ورزی پر موٹر سائیکل سوار پر ڈبل سواری پر ہزاروں کراچی کے لوگوں کا چالان اور جرمانے کیے گئے،جرمانے جمع نہ کرانے پر ہزاروں لوگوں کو جیلوں میں ڈالا گیا اور ان کی زندگی برباد کرنے کی کوشش کی گئی،کیا سندھ میں دو قانون ہیں ایک انتہا پسندوں کے لئے اور ایک پاکستان کے تمام صوبوں کے پنجابی پٹھان بلوچ سرائیکی بنگالی گلگتی مہاجروں اور پاکستان کی حمایت کرنے والے سندھیوں کے لیے دوسرا قانون ہے۔ہم پاکستان کے تمام مقتدر اداروں سے اپیل کرتے ہیں کے معاملات کو انصاف کے ساتھ دیکھا جائے اور تمام قوموں کو انصاف فراہم کیا جائے اور ملک دشمن علیحدگی پسند تنظیموں پر جن پر پابندی لگا دی گئی ھے ان ملک دشمن علیحدگی پسندوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے۔

مزید :

صفحہ آخر -