مسلم لیگ (خان قیوم) ایک بار پھر فعال،معظم بٹ صدر منتخب

  مسلم لیگ (خان قیوم) ایک بار پھر فعال،معظم بٹ صدر منتخب

  

پشاور(سٹی رپورٹر)تاریخی سیاسی پارٹی مسلم لیگ خان عبدالقیوم خان کے نام سے ایک مرتبہ پھر میدان میں اترنے کو تیار ہوگئی, پارٹی کے صدر اور جنرل سیکرٹری کا انتخاب کر لیا گیا, دیگر عہدیدار بھی جلد منتخب کیے جائینگے, مرکزی صدر ایڈوکیٹ معظم بٹ کہتے ہیں کہ اس وقت ملک و قوم کو مخلص قیادت کی ضرورت ہے جس میں موروثی سیاست کی لالچ نہ ہو اور جو عوامی فلاح و بہبود کے لیے ہمہ وقت خدمات انجام دینے کو تیار ہوں, انہوں نے واضح کیا کہ قدرتی وسائل سے مالا مال ملک حکمرانوں کی نااہلی کے باعث قرضوں میں ڈوب کر رہ گیا ہے, نوکریوں اور گھروں کے وعدے کرنے والے آج غریب کو جیتے جی مار چکے ہیں. ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز حاجی فضل عظیم کی رہائیشگاہ پر پارٹی کے اعلان اور عہدیداروں کے انتخاب سمیت سیاسی میدان میں مسلم لیگ عبدالقیوم کی واپسی کے حوالے سے تیاریوں کو جلد حتمی شکل دینے بارے مشاورتی اجلاس میں کیا. اس موقع پر پارٹی کے منتخب ہونے والے جنرل سیکرٹری فقیر حسین بخاری اور دیگر شخصیات بھی موجود تھیں. معظم بٹ کا کہنا تھا کہ خان عبدالقیوم خان کو قائد اعظم محمد علی جناح نے پہلا وزیر اعلی منتخب کیا تھا, انکی غریبوں کے لیے خدمات تاریخ میں سنہری حروف سے یاد رکھی جاتی ہیں. خان عبدالقیوم خان نے صوبے میں یونیورسٹی کے قیام سمیت کارخانے لگوائے اور نوجوانوں کو روزگار مہیا کیا, آج ملک کو ایسی ہی مخلص قیادت کی ضرورت ہے جو وعدہ کرے تو اسے پورا کرنے کی صلاحیت رکھتی ہو. انہوں نے موجودہ حکمرانوں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ آج ملک کے بچے بچے کو مقروض کردیا گیا ہے, جو بچے ابھی پیدا نہیں ہوئے وہ بھی اپنے سر پر قرض کا بوجھ لے کر دنیا میں آئینگے. انہوں نے کہا کہ قدرتی وسائل سے مالا مال ملک ہے لیکن بد قسمتی سے بیرون ممالک کے قرضوں تلے دب کر انکا غلام بنا دیا گیا ہے. معظم بٹ کا مزید کہنا تھا کہ اقتدار کے ایوانوں میں پہنچ کر یہ لوگ اس غریب کو بھول جاتے ہیں جس نے انکے وعدوں پر یقین کرکے اپنا قیمتی ووٹ انہیں دیا ہوتا ہے. انہوں نے مسلم لیگ عبدالقیوم بارے بتاتے ہوئے کہا کہ چاروں صوبوں سمیت بیرون ممالک میں لوگ پارٹی کے ساتھ جڑ چکے ہیں اور خدمت کے جزبے سے سرشار ہیں, ہمارہ اولین مقصد نوجوانوں کو باروزگار کرنا ہے اور میرٹ کا بول بالا کرنا ہے, جدوجہد سے آئین میں ضروری ترامیم سے ملک کو ترقی کی راہ پر گامزن کرنا چاہتے ہیں. انکا کہنا تھا کہ ہم نے سیاست کو کاروبار نہیں بلکہ خدمت اور عبادت سمجھ کے کرنا ہے اسی لیے تنظیم سازی کا عمل جلد مکمل کیا جائیگا.

مزید :

پشاورصفحہ آخر -