لوئیر کرم کے علاقہ بالش خیل کے شاملاتی اراضی پر پاڑہ چمکنی اور بالش قبائل کے بین لڑائی

    لوئیر کرم کے علاقہ بالش خیل کے شاملاتی اراضی پر پاڑہ چمکنی اور بالش قبائل ...

  

پاراچنار(نمائندہ پاکستان)ضلع کرم میں لوئیر کرم کے علاقہ بالش خیل کے شاملاتی اراضی پر پاڑہ چمکنی اور بالش قبائل کے مابین لڑائی چھیڑ گئی دونوں قبائل ایک دوسرے پر بھاری ہتھیار استعمال کررہیہیں حکومت اور سیکورٹی فورسز نے مداخلت نہ کی تو شدید خونریزی کا خطرہ ہے پولیس زرائیع کے مطابق فائرنگ کا سلسلہ اس وقت شروع ہوا جب جب بالش خیل قبائیل اپنی زمینوں میں آبادکاری کے لئے علاقے میں پہنچے بالش قبائل کے راہنما ملک صفدر علی کا کہنا ہے کہ ان کے ہزاروں جریب اراضی پر علاقہ غیر کے پاڑہ چمکنی قبائل نے عرصہ دراز سے قبضہ جما رکھا ہے اور اس پر غیر قانونی تعمیرات کر رکھے ہیں جبکہ طویل قانونی جنگ کے نتیجے میں حکومت نے بالش خیل قبائیل کے حق میں فیصلہ بھی دیا ہے اور غیر قانونی تعمیرات کے مسمار کرنے کے احکامات بھی صادر کئے ہیں مگر اس باوجود پاڑہ چمکنی قبائل نے غیر قانونی تعمیرات جاری رکھا ہے اور عدالتی احکامات پر عمل نہیں ہو رہا ہے جبکہ ہمیں اپنی اراضی میں کام کرنے سے روکا جارہاہے آج جب ہم اپنے اراضی پر کام کرنے کے لئے گئے تو ہمیں دھمکیاں دی گئی اور کام نہیں کرنے دیا گیا اور بعد ازاں ہم پر فائرنگ کرکے لڑائی کا آغاز کیا گیا ملک صفدر علی کا کہنا تھا کہ حکومت اور سیکورٹی فورسز کے اعلی حکام ریوینو ریکارڈ کے مطابق ہمیں ہمارا حق دلانے میں اپنا کردار ادا کریں اور علاقہ غیر کے پاڑہ چمکنی قبائل کے غیر قانونی تعمیرات مسمار کرنے کے لئیفوری طورپر ٹھوس اقدامات اٹھائیں تاکہ علاقہ بے گناہ خونریزی سے محفوظ رہے آخری اطلاعات ملنے تک فائرنگ کا سلسلہ جاری ہے تاہم کسی جانی نقصان کی اطلاع نہیں ملی ہے فائرنگ کے بعد ضلعی انتظامیہ فورسیز پولیس حکام کے علاوہ قبائیلی عمائیدین بھی علاقے میں پہنچ گئے ہیں اور فائر بندی کے لئے جرگہ جاری ہے

مزید :

پشاورصفحہ آخر -