مختلف حادثات، واقعات میں بچی سمیت4ا فراد جاں بحق

  مختلف حادثات، واقعات میں بچی سمیت4ا فراد جاں بحق

  

ڈیرہ، وہاڑی، باگڑ سرگانہ، وجھیانوالہ، چھپ کلاں (بیورو رپورٹ، نمائندہ پاکستان،سٹی رپورٹر، نامہ نگار)باگڑ سرگانہ کی ملحقہ بستی دائمی والا میں گزشتہ کچھ دنوں سے بجلی کے کمبھے کے ساتھ ارتھ والی تار ٹوٹ گئی جس پرمتعلقہ لائن مین کوبتایاگیاجس نے پہلے(بقیہ نمبر35صفحہ6پر)

بھی حصے پر ایک پرائیویٹ الیکٹریشن ایسے کاموں کے لیے رکھاہوا ہے جو صارفین سے بھاری راقم لے کرایسے کام کرتاہے مگریہ تار باوجود اطلاع کے درست نہ کی گئی کیوں کہ رقم کامطالبہ کیاجاتارہامگریہ جونہ دی جاسکی بچی یہاں نئی ملنے کے لیے آئی ہوئی تھی اور اس کے علم نہیں تھاکہ اس تار میں کرنٹ ہے جیسے ہی اس نے اسے ہاتھ لگایاتو اس کو کرنٹ لگ گیاجس سے اس کی موت واقع ہو گئی بچی کے لواحقین نے اس پر شدید احتجاج کرتے ہوئے ملتان عبدالحکیم روڈ بلاک کر کے شدید نعرے بازی کی اور کہا کہ گزشتہ کئی دنوں سے کمبھے کے ساتھ لگی ہوئی ارتھ کی تار جوٹوٹی ہوئی تھی اور واپڈاکے اہل کاروں کے نوٹس میں بھی دیا گیامگر لائن مین بضد رہاکہ اسی پرائیویٹ میرے بندے سے رابطہ کرو لواحقین نے شدید احتجاج کرتے ہوئے اعلی حکام سے مطالبہ کیاہے کہ ایسے تمام اہکاروں کے خلاف قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے جنہوں نے حصے پرپرائیویٹ الیکٹریشن رکھ کریہاں سب ڈویڑن سرائے سدھو میں ات مچا رکھی ہے اورایک ڈی لگواناہوتو بھاری رقم وہ پرائیو یٹ کاریگر لے لیتے ہیں اس موقع پر۔اے ایس پی کبیروالا ایس ایس ایچ او سرائے سدھو اورایس ڈی او واپڈا سب ڈویڑن سرائے سدھو نے موقع پرلواحقین سے مزاکرات کے بعد روڈ کھلویااور متاثرین کے مطالبات کے حل کی یقین دہانی کرائی ہے۔وجھیانوالہ کے نواحی علاقہ 62 ڈبلیو بی کے ہونہار سٹوڈنٹس چوہدری اسد علی ولد لیاقت علی آرائیں اڈاپپلی کے قریب روڈ ایکسڈینٹ میں شدید زخمی ہوگئے اطلاع پر پٹرولنگ پولیس نہ پہنچی اسدعلی روڈ پر پینتالیس منٹ تک مدد کا انتظار کرتا رہا بعدازاں نشر ہسپتال لے جایا گیا مگر خون زیادہ بہہ جانے اور زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے خالق حقیقی سے جا ملا مرحوم اسد علی کے جنازے پر ہر آنکھ اشک بار تھی لواحقین اور گاوں کے لوگوں نے بتایا کہ مرحوم اسد علی میڈیکل کا سٹوڈنٹ تھا جو کہ مستقبل کا سرمایہ تھا مرحوم کی موت کے ذمے دار پٹرولنگ پولیس ہے ان کی غفلت اور موثر گشت نہ ہونے کی وجہ سے پہلے بھی کئی اموات ہو چکی ہیں انہوں نے اعلی حکام سے پٹرولنگ پولیس چوکی 62 ڈبلیو بی کے خلاف فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیاہے اس بارے میں پٹرولنگ پولیس چوکی 62 ڈبلیو بی رابطہ کیا تو انہوں نے موقف دینے انکار کرتے ہوئے فون بند کر دیاہے۔دریائے سندھ پر نہاتے ہوئے نوجوان ڈوب کر ہلاک ڈیرہ کے نواحی علاقہ پائیگاہ کا رہائشی اٹھارہ سالہ نوجوان انس ولد محمد سلیم چنگوانی گرمی کی شدت کے باعث غوث آباد سپر دریائے سندھ کے کنارے پر نہا رہا تھا کہ اچانک دریائے کی تیز لہر نے اسے دبوچ لیا اور وہ ڈوب کر جاں بحق ہوگیا علاقہ مکینوں نے ریسکیو کو اطلاع دی جس پر ریسکیو کے غوطہ خوروں نے موقع پر پہنچ کر تین دن کی محنت کے بعد جھکڑ امام شاہ سپر پر سے نعش کو نکال کر ورثاء کے حوالے کر دیا نوجوان کی نعش گھر پہنچنے پر گھر میں کہرام مچ گیا اور ہر آنکھ اشکبار تھی۔ نواحی گاؤں 19 ڈبلیو بی کے قریب کھیتوں سے ایک لاش برآمد ہوئی پولیس تھانہ ماچھیوال اطلاع ملنے پر موقع پر پہنچ گئی اور نعش کو قبضہ میں لے کر رورل ہیلتھ سنٹر ماچھیوال منتقل کر دیا ذرائع کے مطابق جاں بحق ہونے والا محمد نواز ولد محمد بوٹا جٹ نشے کا عادی تھا اور ماچھیوال پراچہ چوک محمدی محلہ گلی نمبر 4 کا رہائشی تھا.

حادثے

مزید :

ملتان صفحہ آخر -