سید منور حسن کا ملتان میں غائبانہ نماز جنازہ، سیاسی سماجی شخصیات کی شرکت

    سید منور حسن کا ملتان میں غائبانہ نماز جنازہ، سیاسی سماجی شخصیات کی شرکت

  

ملتان (سٹی رپورٹر) سابق امیر جماعت اسلامی پاکستان سید منور حسن کا غائبانہ نماز جنازہ ضلعی امیر ڈاکٹر صفدر اقبال ہاشمی کی امامت میں مدرسہ جامع العلوم میں ادا کیا گیا (بقیہ نمبر21صفحہ6پر)

نماز جنازہ کے موقع پر جماعت اسلامی کے ذمہ دران نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سید منور حسن ایک نظریہ، سوچ اور فکر کا نام تھا۔ آپ کی شخصیت بے داغ کردار کی مالک تھی آپ نے سید مودودی کے قافلہ کا حصہ بنتے ہی اپنے آپ کو اللہ کی راہ اسلامی انقلاب کی کوششوں کے لیے وقف کردیا امیر جماعت اسلامی ملتان ڈاکٹر صفدر ہاشمی نے کہا کہ سید منور حسن جہد مسلسل اور حق گوئی کی علامت تھے آپ کے جانے سے پیدا ہونے والا خلاء کبھی پر نہیں کیا جاسکتا انہوں نے کہا کہ سید منور حسن نے اپنے نظریہ کا اس وقت دفاع کیا جب دنیا ان کے نظریہ کو ماننے کے لیے تیار نہ تھی لیکن آج اسی سوچ کو اپناتے ہوئے یہ ماننا پڑا کہ امریکہ کی لگائی ہوئی آگ کا ایندھن بننا پاکستان کے لیے درست نہ تھا۔ انہوں نے کہا کہ وہ ہمیشہ سیدھی اور کچھری بات کہتے آج بھی ان کے کا دامن کرپشن جیسے الزامات سے پاک ہے انہوں نے کہا کہ 400 گز کے مکان میں رہنے والا سید منور حسن پوری دنیا کی اسلامی تحریکوں کا رہنما اور مربّی تھے۔آج پوری دنیا میں موجود تحریک اسلامی سے وابستہ افراد ان کی وفات پر سوگوار ہیں۔ اس موقع پر سید منور حسن کے قریبی رفیق اسلامی جمعیت طلبہ کے دور کے ان کے دوست اور رکن جماعت اسلامی کلیم اکبر صدیقی، قیم جماعت اسلامی جنوبی پنجاب صہیب عمار صدیقی، نائب امیر جماعت اسلامی جنوبی پنجاب میاں آصف اخوانی، صدر تاجر ونگ تحریک انصاف چوہدری محمود، کنور صدیق،اطہر عزیز،حسان اخوانی،اسرار حسین، عبدالرحمن حیدری، اسد منیر،ڈاکٹر خالد رشید،میاں منیر بودلہ،معاذ امجد سیکرٹری جے آئی یوتھ،سماجی رہنما سعید اللہ شیخ اور دیگر بھی موجود تھے۔

شرکت

مزید :

ملتان صفحہ آخر -