حکومت سیاسی انتقام بھلاکر ملکی ترقی کیلئے اقدامات کرے، رفیق رجوانہ

حکومت سیاسی انتقام بھلاکر ملکی ترقی کیلئے اقدامات کرے، رفیق رجوانہ

  

ملتان (سپیشل رپورٹر) سابق گورنر پنجاب ملک محمد رفیق رجوانہ اور لیگی رہنما ملک آصف رفیق رجوانہ نے حالیہ ملکی حالات پر(بقیہ نمبر4صفحہ6پر)

بات کرتے ہوئے اپنی رائے کا اظہار کیا پہلے بیان میں سابق گورنر پنجاب ملک محمد رفیق رجوانہ نے کہا کہ کرونا جیسی وباء مہنگائی بے روز گاری سے پسی ہوئی عوام اور قوم پر پٹرول بم گرا کر ملک کوار بوں روپے کا نقصان پہنچایاگیا حکومت کو ملک کی کوئی فکر نہیں بلکہ پٹرولیم کے وزیر کہتے ہیں ہمارے ارد گرد کے ممالک کے مقابلے میں ہمارے ہاں پٹرول اور ڈیزل پھر بھی سستا ہے اور بجٹ میں نہ ہی مہنگائی کے لیے کچھ کیا گیا اور نہ ہی سرکاری ملازمتوں اور تنخواہوں میں اضافہ کیا گیا اور ترقیاتی فنڈز نہ وہونے کے برابر ہیں ہمیں اللہ پاک کی آس ہر وقت رکھنی چاہیے اور اس کی رحمت کا طلبگار ہونا چاہیے مگر اس حکومت نے عوام کو حالات کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا ہے حکومت کے اس رویے پر دکھ ہوتا ہے اور اپوزیشن لیڈر میاں محمد شہباز شریف نے پہلے دن ہی کرونا پر غیر مشروت اپنی خدمات پیش کیں اور مل بیٹھ کر یکسوئی سے پالیسی بنا کر کرونا کا مقابلہ کرنے کو کہا مگر وزیر اعظم نے ایک نہ سنی جس کے نتائیج آج عوام بھگت رہے ہیں خدا کے لیے سوچیں یہ ملک سب کا ہے سیاسی انتقام بہت ہو چکا اور کرپشن کے نعرے بہت لگ چکے دو سال حکومت کو آئے ہو گئے مگر ملک دن بدن پچھے جارہا ہے لوگ مسلم لیگ ن کی حکومت اور دور کو آج بھی یاد کرتے ہیں انشاء اللہ میاں نواز شریف کی قیادت میں ملک دوبارہ ترقی کی جانب گامزن ہوگا لیگی رہنما ملک آصف رفیق رجوانہ نے کہا کہ موجودہ حکومت آٹا مافیا شوگر مافیا پٹرول مافیا مل کر دن بدن ملک کو معاشی تباہی کی طرف لے جارہی ہے ہم تو چاہتے تھے کے موجودہ حکومت اپنی مدت پانچ سال پورے کر ے اور عوام کی خدمت کرے مگر بد قسمتی سے حکومت اپنے ہی بوجھ تلے دبتی جارہی ہے حکومت کی جانب سے مختلف بیانا ت دیے گئے اور مختلف پالیساں بنائی گئی جس میں حسب عادت وزیر اعظم کی جانب سے یو ٹرن لیے گئے لاک ڈاؤن ہوگا نہیں ہوگا سمارٹ لاک ڈاؤن گھبرانا نہیں سکون صرف قبر میں ہے وغیرہ وغیرہ جو باتیں وزیر اعظم اپنی تقاریر میں کرتے ہیں اس سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ ان کے پاس کوئی جامع پالیسی نہیں ہے یہ باتیں غریب عوام کے زخموں پر نمک چھڑکنے کے مترادف ہے رہی سہی کسر بجٹ نے پوری کر دی ہے۔

رفیق رجوانہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -