وعدوں کے بعد حکمران ملک وقوم کیساتھ بے وفائی کررہے ہیں، سید ذیشان اختر

  وعدوں کے بعد حکمران ملک وقوم کیساتھ بے وفائی کررہے ہیں، سید ذیشان اختر

  

بہاولپور(ڈسٹرکٹ رپورٹر)نائب امیر صوبہ جماعت اسلامی جنوبی پنجاب سیدذیشان اخترنے کہاکہ پاکستان اسوقت (بقیہ نمبر11صفحہ6پر)

بہت ہی مشکل صورتحال سے دوچار ہے۔ وزیراعظم اپنے بائیس ماہ کے کاموں کی صفائیاں پیش کر رہے ہیں کہ میرے قول و فعل میں کوئی تضاد نہیں۔ وزیراعظم نے ایک بار پھر یوٹرن لیتے ہوئے کہاہے کہ میں نے آج تک کوئی یوٹرن نہیں لیا حالانکہ پہلے وہ کہتے تھے کہ بڑے لیڈر کی پہچان ہی یہی ہے کہ وہ یوٹرن لیتاہے۔انہوں نے کہاکھ اس وقت سمارٹ لاک ڈاؤن کی طرح ملک میں سمارٹ حکومت ہے۔ ملک کے کسی علاقے میں حکومت ہے اور کہیں حکومت نہیں ہے۔ کسی کچھ معلوم نہیں کہ حکومت کون چلاتاہے۔ پالیسیاں کہاں بنتی ہیں اور ان پر عملدرآمد کون کرواتاہے۔ انہوں نے کہاکہ حکمران ملک و قوم اور اللہ کے ساتھ بے وفائی کر رہے ہیں اور مدینہ کی ریاست کا مذاق اڑا رہے ہیں۔ حکومت اپنے کسی ایک وعدہ پر عمل نہیں کر سکی۔ ملک میں مہنگائی، بے روزگاری، غربت اور بے چینی میں مسلسل اضافہ ہورہاہے۔ لوگ پریشان ہیں مگر حکمران اپنی موج میں مست ہیں۔انہوں نے کہاکہ دشمن ہماری سرحد پر بیٹھا ہے اور حکمران آپس میں دست و گریبان ہیں۔ ان حکمرانوں نے ایک دوسرے کی ٹانگیں کھینچنے، گریبان پھاڑنے اور ایک دوسرے کو نیچا دکھانے میں مہارت حاصل کر رکھی ہے۔ انہوں نے کہاکہ موجودہ حکومت سابقہ حکومتوں کا ہی تسلسل ہے۔ سابقہ اور موجودہ حکومت میں ذرہ برابر فرق نہیں۔ یہ ایک ہی در کے فقیر اور ورلڈ بنک اور آئی ایم ایف کے غلام ہیں۔ سابقہ حکومتوں نے اپنے دور میں 31ہزار ارب کا قرضہ لیا اور موجودہ حکومت نے بائیس ماہ میں اس قرضے کو 43 ہزار ارب تک پہنچا دیا ہے۔انہوں نے کہاکہ ملک میں اس وقت ایک سیاسی خلا ہے اور اس خلا کو صرف جماعت اسلامی پر کر سکتی ہے۔ ملک کو جس انقلاب اور حقیقی تبدیلی کی ضرورت ہے، وہ صرف اللہ اور اس کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے عطا کردہ نظام میں ہے۔

ذیشان اختر

مزید :

ملتان صفحہ آخر -