سپریم کورٹ :ڈینئل پرل قتل کیس میں سندھ حکومت کی حکم امتناع اور ملزموں کی بریت کیخلاف استدعا مسترد

سپریم کورٹ :ڈینئل پرل قتل کیس میں سندھ حکومت کی حکم امتناع اور ملزموں کی بریت ...
سپریم کورٹ :ڈینئل پرل قتل کیس میں سندھ حکومت کی حکم امتناع اور ملزموں کی بریت کیخلاف استدعا مسترد

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ نے ڈینئل پرل قتل کیس میں سندھ حکومت کی حکم امتناع کی استدعا مسترد کردی،عدالت نے ملزمان کی بریت کافیصلہ معطل کرنے کی استدعابھی مستردکردی۔

نجی ٹی وی کے مطابق سپریم کورٹ میں ڈینئل پرل قتل کیس میںسندھ حکومت کی حکم امتناع کی درخواست پر سماعت ہوئی،سپریم کورٹ کے جسٹس مشیر عالم کی سربراہی میں 3رکنی بینچ نے سماعت کی،سندھ حکومت نے سندھ ہائیکورٹ کے فیصلے کے خلاف حکم امتناع کی استدعا کی تھی،وکیل سندھ حکومت نے دلائل دیتے ہوئے کہاکہ ملزم بین الاقوامی دہشتگردہے،ایم پی او کے تحت رکھا گیا،جسٹس یحییٰ آفریدی نے کہا کہ ملزموں کی بریت کے بعدآپ ان کو کیسے دہشتگردکہہ سکتے ہیں؟،وکیل سندھ حکومت نے کہاکہ ایک ملزم بھارت اور دوسرا افغانستان میں بھی دہشتگرد تنظیم کے ساتھ کام کرتارہا،ملزم آزادہوئے تو سنگین اثرات ہو سکتے ہیں ۔

جسٹس یحییٰ آفریدی نے کہا کہ ذہن میں رکھیں ملزموں کو ایک عدالت نے بری کیا ہے،وکیل ملزم نے کہاکہ سپریم کورٹ کے سامنے ایسا بیان کیسے دیا جا سکتا ہے،ملزموں نے 18 سال سے سورج نہیں دیکھا،جسٹس مشیر عالم نے کہاکہ بریت کے حکم کو ٹھوس وجہ کے بغیر کیسے معطل کیا جا سکتا ہے؟،فیصلے میں کوئی سقم ہوتب ہی معطل ہو سکتا ہے،وکیل سندھ حکومت نے کہاکہ 2 جولائی کوایم پی اوکاقانون ختم ہوجائےگا،جسٹس مشیر عالم نے کہاکہ حکومت چاہے تو ایم پی او میں توسیع کرسکتی ہے،اعلیٰ عدلیہ نے ڈینئل پرل قتل کیس میں سندھ حکومت کی استدعا مستردکردی ،عدالت نے ملزموں کی بریت کیخلاف بھی سندھ حکومت کی استدعا مسترد کرتے ہوئے سماعت ستمبر تک ملتوی کردی۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -علاقائی -اسلام آباد -