ڈریپ کا ادارہ ادویہ ساز کمپنیوں کے نیچے لگا ہوا ہے ،سپریم کورٹ کا وفاقی حکومت کو ادویات کی قیمتوں پر4 ہفتے میں فیصلہ کرنے کاحکم

ڈریپ کا ادارہ ادویہ ساز کمپنیوں کے نیچے لگا ہوا ہے ،سپریم کورٹ کا وفاقی حکومت ...
ڈریپ کا ادارہ ادویہ ساز کمپنیوں کے نیچے لگا ہوا ہے ،سپریم کورٹ کا وفاقی حکومت کو ادویات کی قیمتوں پر4 ہفتے میں فیصلہ کرنے کاحکم

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ نے ادویات کی قیمتوں سے متعلق کیس میں وفاقی حکومت کو ادویات کی قیمتوں پر 4 ہفتے میں فیصلہ کرنے کا حکم دیدیا،چیف جسٹس گلزاراحمد نے ریمارکس دیتے ہوئے کہاکہ دنیا میں ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی بڑی مضبوط ہے ،ہمارا ڈریپ کا ادارہ ادویہ ساز کمپنیوں کے نیچے لگا ہوا ہے ۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں ادویہ کی قیمتوں سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی،چیف جسٹس گلزاراحمد کی سربراہی میں بنچ نے سماعت کی،چیف جسٹس گلزاراحمد نے ریمارکس دیتے ہوئے کہاکہ دنیا میں ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی بڑی مضبوط ہے ،ہمارا ڈریپ کا ادارہ ادویہ ساز کمپنیوں کے نیچے لگا ہوا ہے ۔

چیف جسٹس پاکستان نے کہاکہ ڈریپ ادویات کی قیمتوں کو گھماتا رہتا ہے، ڈریپ چاہتا ہے تمام کمپنیاں اس کے دروازے پر آکر بیٹھی رہیں ،ڈائریکٹر ڈریپ نے کہاکہ ادویہ کی قیمتوں کو کنٹرول کی کوشش کررہے ہیں ،جسٹس اعجازالاحسن نے استفسار کیا کہ ادویہ کی قیتموں کے تعین میں اتنا وقت کیوں لگتا ہے ۔سپریم کورٹ نے وفاقی حکومت کو ادویات کی قیمتوں پر 4 ہفتے میں فیصلہ کرنے کا حکم دیدیا۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -