2018میں ایسی حکومت آئی جس کے لیڈر نے کبھی ایک یوسی تک نہ چلائی، احسن اقبال

2018میں ایسی حکومت آئی جس کے لیڈر نے کبھی ایک یوسی تک نہ چلائی، احسن اقبال
2018میں ایسی حکومت آئی جس کے لیڈر نے کبھی ایک یوسی تک نہ چلائی، احسن اقبال

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)مسلم لیگ ن کے رہنما احسن اقبال نے کہاہے کہ2018میں ایسی حکومت آئی جس کے لیڈر نے کبھی ایک یوسی تک نہ چلائی، اناڑی کی ٹریننگ پاکستان کو بہت مہنگی پڑی،اپنی ضد اور انا کیلئے پاکستان کے ایک ایک سیکٹر کو گرایاجارہاہے۔

مسلم لیگ ن کے رہنما احسن اقبال نے اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہاکہ 2018میں ایسی حکومت آئی جس کے لیڈر نے کبھی ایک یوسی تک نہ چلائی،نارووال کے عوام سے پوچھتا تھا موٹرسائیکل کسی اناڑی کو دو گے تو کیا ہوگا؟،اناڑی ڈرائیور پہلے دن وزیراعظم بنا اور پوری مشینری کو دیکھ کر ششدر رہ گیا،اناڑی کی ٹریننگ پاکستان کو بہت مہنگی پڑی،اپنی ضد اور انا کیلئے پاکستان کے ایک ایک سیکٹر کو گرایاجارہاہے۔

احسن اقبال نے کہاکہ عمران خان نے اتنا ہی ٹیکس دیا جتنا میں نے،میری آمدن میں ایک کنال گھر کا خرچ مشکل سے چلتا ہے،عمران خان 300کنال کے محل کا خرچ کیسے چلاتے ہیں؟،یہ خود کو فرشتہ صفت ثابت کرناچاہتے ہیں۔لیگی رہنمااحسن اقبال نے کہاکہ کہا گیا یہ ریفارمز کی حکومت ہے،20ویں صدی میں دنیا میں 2ممالک نے ریفارمز کیے،مشکل اقتصادی بحران کے باوجود ملک کے پاس وزیرخزانہ ہی نہیں،یہ بجٹ آئی ایم ایف کے ہیڈکوارٹر سے بن کر آیا ہے۔

آج پاکستان بدترین معاشی بحران کا سامنا کررہا ہے،یہ بحران انسان کی لائی ہوئی آفت ہے،ماضی کی تمام کامیابیوں کو صفر کرنے کیلئے مستقبل کے ساتھ کھیلا گیا،ن لیگ حکومت نے 5سال میں سرمایہ کاروں کااعتماد پیدا کیا،ہم نے قرضے لے کر ملک میں ترقی کا جال بچھایا،انہوں نے عوام کے گلے میں پھندا ڈالا،بجٹ میں نوجوانوں کے بجٹ سے کھیلا گیا ہے،یہ نوجوانوں کا قاتل بجٹ ہے۔

رہنما مسلم لیگ ن نے کہاکہ 2018میں تیل کی قیمت 72ڈالر فی بیرل تھی،2018میں پاکستان میں پیٹرول 88روپے فی لیٹر تھا،آج عالمی منڈی میں تیل 40ڈالر فی بیرل ،پاکستان میں پیٹرول 100روپے فی لیٹر ہے۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -