جوہر ٹاؤن دھماکے کے تمام ملزمان گرفتار کر لئے، سیف سٹی کی تمام ضروریات پوری کرینگے: عثمان بزدار

جوہر ٹاؤن دھماکے کے تمام ملزمان گرفتار کر لئے، سیف سٹی کی تمام ضروریات پوری ...

  

 لاہور(جنرل رپورٹر)وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کہاہے پنجاب حکومت نے جوہر ٹاؤن میں ہونیوالے بم دھماکے کی تحقیقات کیلئے خصوصی تحقیقاتی ٹیم قائم کی۔ تحقیقاتی ٹیم نے سائنسی انداز میں تفتیش کو تیزی سے آگے بڑھایا۔ کیس کو ٹریس کرنا اور دہشت گردوں اور ان کے سہولت کاروں تک پہنچنا ایک ٹیسٹ کیس تھا۔سی ٹی ڈی نے کیس کی تحقیقا ت کا آغاز پیشہ ورانہ انداز میں کیا۔ 16 گھنٹے کے اندر دھماکے کے ذمہ داروں کا تعین کیا گیا۔ دھماکے میں ملوث تمام بین الاقوامی و مقامی کرداروں کی شناخت کی گئی۔ صرف 4 دن کے اندر ملک کے مختلف علاقوں میں ریڈ کرکے دہشت گردوں کو گرفتار کیا گیا۔ دہشت گردی میں استعمال ہونیوالی گاڑی کے خریدار، اس کی حوالگی، بارودی مواد نصب کرنیوالے، ریکی اور دھماکہ کرنے میں ملوث دہشت گردوں کو پیشہ ورانہ مہارت سے گرفتار کیا گیا۔ اس کیس کو ٹریس کرنا پنجاب حکومت کی ایک بڑی کامیابی ہے۔ میں پنجاب پولیس، قانون نافذ کرنیوالے اداروں، ایجنسیوں اور خصوصاً سی ٹی ڈی کو مبارکباد اور شاباش دیتا ہوں۔دوران تحقیقات دہشت گردوں کے اس نیٹ ورک کو مالی معاونت فراہم کرنیوالے بین الاقوامی کرداروں کے تانے بانے مقامی دہشت گردوں سے ملنے کے تمام شواہد حاصل کر لئے گئے ہیں اوران شواہد کے مطابق اس کارروائی میں دشمن ملک کی ایجنسی براہ راست ملو ث ہے جس نے اس نیٹ ورک کو تمام مالی معاونت فراہم کی۔وہ وزیر اعلی آفس میں پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔ صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت، معاون خصوصی اطلا عات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان، انسپکٹر جنرل پولیس، پرنسپل سیکرٹری وزیر اعلی،ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ، ایڈیشنل آئی جی سی ٹی ڈی اور متعلقہ حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔ وزیر اعلی نے کہا پنجاب حکومت نے صوبے میں تمام ہائی پروفائل کیسوں کو ٹریس کیا، ملزمان کو گرفتار کرکے قانون کے حوالے کیا ہے۔ بلاشبہ یہ کیس بھی ایک چیلنج تھا جس میں اللہ تعالیٰ نے ہمیں سرخرو کیا۔انہوں نے کہا اس واقعہ کے حوالے سے کسی کی جانب سے کوئی الرٹ جاری نہیں ہوا تھا۔شہداء کے لواحقین اور زخمیوں کو مالی امداد دی جا رہی ہے۔پنجاب سیف سٹی اتھارٹی بہترین کام کر رہی ہے اور حال ہی میں کیمروں کو تبدیل بھی کیا گیا ہے۔پنجاب سیف سٹی اتھارٹی کی ضروریات کو ترجیحی بنیادوں پر پورا کریں گے۔وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کہا جنوبی پنجاب کیلئے پہلی بار علیحدہ ترقیاتی بجٹ کی بک مرتب کی گئی ہے۔ سابق حکمرانوں نے جنوبی پنجاب کے عوام کے حقوق غصب کئے۔ ہماری حکومت نے جنوبی پنجاب کو اس کا حق واپس کیا ہے۔ سابق ادوار میں جنوبی پنجاب کے فنڈز کو دیگر شہروں پر خرچ کرنے کیساتھ ساتھ ترقیاتی فنڈز دیگر منصوبوں کو منتقل کئے اور جنوبی پنجاب کے عوام کو ترقی کے نام پر دھوکہ دیا۔ اب جنوبی پنجاب کے فنڈز کسی شہر کو منتقل ہونگے نہ کسی اور منصوبے پر خرچ کئے جاسکیں گے اور جنوبی پنجاب کے فنڈز وہاں کے عوا م کی ترقی اورخوشحالی پر ہی صرف ہونگے۔ ماضی میں جنوبی پنجاب پر ترقیاتی بجٹ کے استعمال کا تناسب17 فیصد سے زائد نہیں تھا،ہم نے 34 فیصد سے زائد بجٹ مختص کیاہے۔ جنو بی پنجاب کی پسماندگی اور محرومی کے دن گزر چکے۔وزیر اعظم عمران خان کی قیادت میں نہ صرف پورے ملک بلکہ جنوبی پنجاب میں ترقی و خوشحالی کے نئے باب رقم کرینگے۔وزیراعلیٰ پنجاب نے کہا خانیوال کی 4 سالہ معصوم بچی کو قتل کرنیوالا ملزم قانون کے تحت سخت سزا کا حقدار ہے۔ بچی کے غمزدہ خاندان کو ہر صورت انصاف فراہم کر یں گے۔ اس کیس میں نا صرف انصاف ہو گا بلکہ انصاف ہوتا ہوا نظر آئے گا، بچی کے غمزدہ خاندان سے دلی ہمدردی ہے، لواحقین کی ہر ممکن مدد کی جائیگی۔اس موقع پرانسپکٹر جنرل پولیس پنجاب انعام غنی نے بتایاپنجاب پولیس اور سی ٹی ڈی نے دہشت گردوں کے اس پورے نیٹ ورک کا سراغ لگایا اور اس سے جڑے تمام کردار اس وقت قانون کی گرفت میں ہیں۔10 پاکستانی شہری جن کا تعلق اس نیٹ ورک سے نکلا، انہیں گرفتار کر لیا گیا ہے، ان میں خواتین بھی شامل ہیں، دہشت گردی کے اس واقعہ کے ماسٹر مائنڈ کی شنا خت ہو چکی ہے۔جوائنٹ انویسٹی گیشن ٹیم تحقیقات کر رہی ہے اور گرفتار ملزمان کو قانون کے مطابق سخت سزا دلوائیں گے۔ کسی ملزم کا تعلق فورتھ شیڈول سے نہیں۔ دھماکے میں استعما ل ہونیوالی گاڑی 2010ء میں چھینی گئی تھی اور 2011ء میں اس گاڑی کو ریکور کیا گیا تھا اور اب یہ سپردداری پر تھی، گرفتار ہونیوالے ایک ملزم کا تعلق خیبر پختونخوا سے ہے اور وہ بڑی روانی سے پنجابی بولتا ہے۔ گاڑی کو پولیس ناکے پر روکا بھی گیا اور چیک بھی کیا گیا، اس کی فوٹیج موجود ہے، پنجاب میں نومبر 2020ء میں تخریب کاری کا آخری واقعہ ہوا تھا اور اس کے بعد جوہر ٹاؤن میں یہ واقعہ ہوا ہے جس کا مقصد پاکستان کا عالمی سطح پر امیج خرا ب کرنا تھا۔ 

وزیر اعلیٰ پنجاب

مزید :

صفحہ اول -