خانیوال، زیبا ندیم قتل کیس، ملزم کا4روزہ جسمانی ریمانڈ منظور

خانیوال، زیبا ندیم قتل کیس، ملزم کا4روزہ جسمانی ریمانڈ منظور

  

خانیوال، بارہ میل(نمائندہ پاکستان، بیورو نیوز، نامہ نگار) زیبا ندیم قتل کیس، پولیس نے سفاک ملزم حقیقی چچا کو عدالت میں پیش کرکے 4 روزہ جسمانی ریمانڈ (بقیہ نمبر11صفحہ6پر)

حاصل کرلیا، مقتولہ بچی کے والدین تاحال سکتے میں، ملزم چچا کی رکشہ پر لاش لیجاتے کی سی سی ٹی وی فوٹیج بھی سامنے آگئی، عوامی سماجی حلقوں کا ملزم کو سخت سے سخت سزا دینے کا مطالبہ  تفصیل کے مطابق بستی عزیز آباد میں 4سالہ بچی کا اپنے ہی حقیقی چچا کے ہاتھوں قتل کے سانحہ کے بعد بچی کے والدین ابھی تک سکتے میں ہیں انکا کہنا ہے کہ ہمیں ابھی تک یقین ہی نہیں ہورہا کہ بچی کو اسکے چچا نے قتل کردیا۔ادھر پولیس نے گرفتار حقیقی چچا بنیامین کو اعتراف جرم کے بعد مقامی مجسٹریٹ کی عدالت میں پیش کرکے 4 روزہ ریمانڈ حاصل کرلیا اور پولیس  ملزم کو ڈی این اے کیلئے لاہور منتقل کررہی ہے۔جبکہ دوسری معصوم بچی کی لاش کو لیجاتے ہوئے  ملزم کی سی سی ٹی وی فوٹیج بھی سامنے آگئی ہیں جس میں چچا رکشہ میں گٹو بند لاش لیجاتے دیکھا جاسکتا ہے۔ یادرہے کہ سی سی ٹی وی کیمرے کی ویڈیو منظر عام پر آنے کے بعد پولیس نے ملزم کو فوراً گرفتار کرلیا تھا جس نے اعتراف جرم بھی کرلیا تھا۔ پولیس کا کہنا ہے تمام حقائق سے پردہ اٹھا یا جائیگا اور ملزم کو قرار واقعی سزا دی جائے گی۔ ادھر عوامی سماجی حلقوں اور شہریوں کی بڑی تعداد نے وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار سے حقیقی چچا ملزم بنیامین کو پھانسی دینے کا مطالبہ کیا ہے۔نشان حیدر دفاع کونسل کے ضلعی چیئرمین سلیم اشرف ڈاہر ایڈووکیٹ نے چارسالہ معصوم بچی کے اغوار اور مسخ شدہ بوری بند لاش پر انتہائی افسوس اور مذمت کرتے ہوئے کہاکہ معاشرے میں بڑھتی ہوئی بے راہ روی انتہائی تشویش ناک ہے۔انہوں نے انہوں نے مطالبہ کیاکہ مجرموں کو عبرت ناک سزا دی جائے تاکہ ایسے واقعات کو روکا جاسکے۔ انہوں نے متاثرہ خاندان سے ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے اپنے تعاون کا یقین دلایا.تحریک انصاف کی ضلعی صدر خواتین ونگ زاہدہ فاطمہ نے چار سالہ زیبہ کو زیادتی کے بعد قتل کرنے کی پرزور مذمت کی اور لواحقین کے دکھ میں برابر کے شریک ہیں انہوں نے کہاکہ موجودہ پی ٹی آئی حکومت نے بہت کم وقت میں چار سالہ بچی سے زیادتی اور قتل کے ملز م اور لاہور دھماکہ کے ملزموں کو گرفتار کرنا حکومت کو خراج تحسین پیش کرتی ہوں ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز صحافیو ں سے گفتگو کے دوران کیا انہوں نے مزیدکہا کہ ملزموں کو سخت سے سخت سزادی جائے گی جدید ٹیکنالوجی سے ملزمان کو ٹریس کرنا حکومت کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔معروف سماجی شخصیت چوہدری عبدالقیوم نے بستی عزیز آباد خانیوال میں 4سالہ بچی زیبا ندیم کیساتھ زیادتی اور قتل اور نعش کی بے حرمی کی مذمت کرتے ہوئے کہاکہ گرفتار مجرم کو سرعام پھانسی پر لٹکایا جائے معصوم بچیوں کیساتھ ظلم وزیادتی اور قتل کے بڑھتے ہوئے واقعات حکومت کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے درندے ہر گز کسی رحم اور رعایت کے مستحق نہیں ہیں ان خیالا ت کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز صحافیوں سے گفتگو کے دوران کیا سانحہ خانیوال ظلم و بربریت کی بدترین مثال ہے،چار سالہ بچی زیباکے قتل کا معاملہ انسانیت کے سر شرم سے جھک گئے،واقعہ کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے،ہر ضلع میں چائلڈ سیفٹی سیل بنائے جائیں اور بچوں کو جنسی تشدد سے بچاؤ کے لیے آگاہی مہم چلانی چاہیے ایسے واقعات معاشرے کی بے حسی کی انتہا اور ہمارے لیے لمحہ فکریہ ہے،مقتول بچی کا چچا قاتل نکلا جس کی وجہ سے  قریبی رشتوں سے اعتماد اٹھ گیا۔ان خیالات کا اظہارمقامی صحافیوں نے میڈیا ہاؤس چوپڑہٹہ میں مظہر حسین باٹی،قاسم چوہدری،ملک طاہر نائچ،راؤ عالمگیر منگت،شیر محمد لودھی،چوہدری ندیم آرائیں،آفتاب سہو،صفدر سہیل سہو،چوہدری شبیر احمد چاند سہو،چوہدری نوید علی چدھڑ،رمضان سلطانی،محمد آصف،جاوید جوئیہ،الطاف سندھو،محمد حسین باٹی،نعیم کمبوہ،غلام شبیر مغل،مظہر عباس سیال،شاہد محموداورمحمد ضیا ء اقبال ودیگر نے اپنے مشترکہ بیان میں کیا انہوں نے کہا اس واقعہ میں انتظامیہ کی نااہلی کھل کر سامنے آئی ہے،افسران بالا نے ایک انسپکٹر کو معطل کرکے کیا مظلوم خاندان کو انصاف مہیا کردیا ہے اس معاملے میں ضلع خانیوال کے افسران برابر کے شریک ہیں ان کو بھی سزا دینی چاہیے،مقتول معصوم بچی کا قاتل اس کا سگا چچا نکلا جس کی وجہ سے قریبی رشتوں سے اعتماد اٹھا گیا،والدین کو چاہیے کہ اپنے بچوں کی تعلیم و تربیت پر خصوصی توجہ دیں، ملزم کو پھانسی کے پھندے پر لٹکانا چاہیے تاکہ دوبارہ ایسا واقعہ کرنے کی کسی میں جرات نہ ہو،درندگی کا مظاہرہ کرنے والے کسی رعایت کے مستحق نہیں ہیں۔

منظور

مزید :

ملتان صفحہ آخر -