لوڈشیڈنگ سے نجات کیلئے کالا باغ ڈیم کی تعمیر ضروری ہے،افتخار حسین

لوڈشیڈنگ سے نجات کیلئے کالا باغ ڈیم کی تعمیر ضروری ہے،افتخار حسین

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 لاہور (پ ر ) ہیومن رائٹس ویلفےئر فورم کے صدر افتخار حسین نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ لوڈ شیڈنگ سے نجات حاصل کرنے اور سستی بجلی کے حصول کیلئے کالا باغ ڈیم ،دیا مر،بھاشا،مہمند،اکھوڑی،بونجی،کرم تنگی ، منڈا ، داسوسمیت دیگر ڈیمز فوری تعمیر کیے جائیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز مقامی ہوٹل میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ انہو ں نے کہا کہ حکومت نئے آبی ذخائر کی تعمیر کے حوالے سے آل پارٹیز کانفرنس کا انعقاد کرے     اور جس طرح تمام سیاسی و مذہبی جماعتوں کو دہشت گرد کے خلاف ایک صفحے پر لایا گیا تھا اسی طرح نئے آبی ذخائر کی تعمیر کے حوالے سے بھی تمام سیاسی و مذہبی جماعتوں کو اکٹھا کیا جائے ،آبی ذخائر کی تعمیر کو سیاست کی بھینٹ نہ چڑھانے دیا جائے،تمام سیاست دان اور مذہبی رہنما اس اہم قومی مسئلیکے حل اور ملک کے وسیع تر مفاد میں اپنی سوچ کو تبدیل کریں اور تمام تر سیاسی و مذہبی اختلافات کو بالائے تاک رکھتے ہوئے آبی ذخائر کی تعمیر پر اتفاق کا مظاہرہ کریں کیونکہ پاکستان کی بقاء و سلامتی اور ترقی و خوشحالی کا راز کالا باغ ڈیم سمیت نئے آبی ذخائر کی تعمیر میں ہی پوشیدہ ہے۔ انہو ں نے کہا کہ کالا باغ ڈیم کی تعمیر سے اندھیرے میں ڈوبا ہوا پاکستان روشن ہو جائے گااور اس کی تعمیرکے بعد صنعتی پیداوار میں پانچ سے چھ ارب ڈالر جبکہ زرعی پیداوار میں دس سے بارہ ارب ڈالر سالانہ اضافہ ہو جائے گا، کالاباغ ڈیم بننے سے اٹھارہ روپے یونٹ والی بجلی دو روپے میں ملے گی،     کالاباغ ڈیم سے سالانہ پندرہ ارب یونٹ بجلی پیدا ہو گی جس سے سالانہ تین سو ارب روپے کی بچت ممکن ہوگی جو کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کے خاتمے، ذرمبادلہ کے ذخائر میں اضافے اور روپے کی قدر مستحکم کرنے میں اہم کردار ادا کرئے گا لہذا کالا باغ ڈیم کی مخالفت کرنے والے لوگ ملک دُشمن ہیں،حکو مت فوری طور پر کالا باغ ڈیم کی تعمیر کو ممکن بنائے ۔ اُنہوں نے کہا کہ کالاباغ ڈیم وہ واحد پراجیکٹ ہے جس سے نہ صرف پانچ سال کے قلیل عرصے میں انتہائی سستی بجلی پیدا کی جا سکتی ہیں بلکہ وسیع تر فوائد بھی حاصل کئے جاسکتے ہیں۔