منی لانڈرنگ کیس ،ماڈل ایان مزید 14روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر اڈیالہ جیل منتقل

منی لانڈرنگ کیس ،ماڈل ایان مزید 14روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر اڈیالہ جیل منتقل

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 راولپنڈی/گوجر خان(اے این این) منی لانڈرنگ کیس میں ماڈل ایان علی راولپنڈی کی کسٹم عدالت میں پیش،جوڈیشل ریمانڈ میں 14روز کی توسیع،ملزمہ کی جیل میں بی کلاس دینے کی درخواست مسترد،پیشی پر ملاقات کے لئے آنے والے ایان علی کے والد گوجر خان میں قاتلانہ حملے میں زخمی،ہولی فیملی ہسپتال منتقل،حالت خطرے سے باہر۔ہفتہ کو ایان علی کو 14 روز جوڈیشل ریمانڈ پورا ہونے پر سخت سیکیورٹی میں کسٹم عدالت راولپنڈی میں پیش کیا گیا جہاں جج چوہدری ممتاز نے کیس کی سماعت کی، دوران سماعت کسٹم حکام کی جانب سے ملزمہ کے جوڈیشل ریمانڈ میں 2 ہفتوں کی توسیع کی درخواست کی گئی جسے عدالت نے منظور کرتے ہوئے کسٹم حکام کو آئندہ سماعت پر چالان پیش کرنے کا حکم دیا ۔ ملزمہ کی جانب سے اڈیالہ جیل میں بی کلاس منتقلی پر کسٹم وکلا نے دلائل میں موقف اختیار کیا کہ اسمگلنگ کیس میں کسی بھی ملزم کو بی کلاس میں منتقل نہیں کیا جا سکتا، جس پر ماڈل آیان علی کے وکلا نے جیل میں ماڈل کو بی کلاس میں منتقل کئے جانے کی درخواست واپس لے لی ۔ عدالت میں پیشی کے بعد ماڈل آیان علی کے 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ میں توسیع کر تے ہوئے سماعت 11 اپریل تک ملتوی کر دی ۔ماڈل آیان کو بے نظیر انٹرنیشنل ایئر پورٹ پر 5 لاکھ امریکی ڈالر دبئی لے جاتے ہوئے گرفتار کیا گیا تھا۔دوسری جانب ماڈل کی جانب سے اسلام آباد ہائی کورٹ میں ضمانت کی درخواست بھی دائر کی گئی ہے جس کی سماعت 31 مارچ کو ہوگی۔ادھر گوجر خان میں ایان علی کے والد محمد حفیظ نامعلوم افراد کی فائرنگ میں زخمی ہو گئے ہیں۔ محمد حفیظ گوجر خان سے اپنی بیٹی سے ملنے راولپنڈی کچہری آرہے تھے کہ راستے میں نامعلوم موٹر سائیکل سوار ملزمان نے ان کی گاڑی پر فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں وہ زخمی ہوگئے، محمد حفیظ کو فوری طور پر تحصیل ہیڈ کوارٹر اسپتال لے جایا گیا جہاں انہیں ابتدائی طبی امداد فراہم کئے جانے کے بعد راولپنڈی کے ہولی فیملی اسپتال منتقل کردیا گیا جہاں ان کی حالت خطرے سے باہر بتائی جاتی ہے۔دوسری جانب زخمی محمد حفیظ نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ بیٹی کی گرفتاری اور اس پر مقدمے کے بعد یہ ان پر تیسرا حملہ ہے، پہلا حملہ 19 مارچ کو کیا گیا اور مجھ سے کہا گیا کہ مقدمے کی پیروی چھوڑ دوں تاہم میرے انکار پر 23 مارچ کو مجھ پر دوبارہ حملہ کیا گیا۔ جس میں محفوظ رہا تھاآج پھر نشانہ بنایا گیا لیکن اللہ نے بچا لیا ہے۔

مزید :

صفحہ اول -