پاکستان کو سستی ایل این جی فراہم کرنے کو تیار ہیں،بھارت

پاکستان کو سستی ایل این جی فراہم کرنے کو تیار ہیں،بھارت

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

نئی دہلی ( آن لائن ).بھارت کے وزیر مملکت برائے پیٹرولیم اور قدرتی گیس دھرمیندر پردھان نے کہا ہے کہ وہ پاکستان کو گیس فروخت کرنے کے لئے تیار ہے۔ گزشتہ سال دونوں ممالک کے درمیان پانچ ملین میٹرک کیوبک میٹر یومیہ گیس فراہمی کا معاہد طے پانے کے قریب تھا۔ بھارتی میڈیا کے مطا بق انہوں نے کہا کہ بھارت کا پبلک سیکٹر یونٹس اتنا مضبوط ہے کہ ہمسایہ ممالک جس شرح سے گیس حاصل کر رہے ہیں۔بھارت ان کے مقابلے میں پاکستان کی ملکی ضروریات پوری کرنے کیلئے سستے نرخوں پر ایل این جی فروخت کرنے لئے کافی مضبوط ہے۔تاہم انہوں نے کہایہ ایک سفارتی، جغرافیائی و سیاسی مسئلہ تھا ،گزشتہ برس دونوں ممالک کے درمیان کشیدہ تعلقات کی وجہ سے پاکستان کو گیس فراہمی کی تجویز پر عمل درآمد رک گیا تھا۔گزشتہ سال گیل انڈیا،اور انٹر اسٹیٹ گیس سسٹم پاکستان تقریباً پچاس لاکھ میٹرک اسٹینڈرڈ کیوبک میٹر یومیہ فراہم کرنے کے ایک معاہدے پرپہنچ چکے تھے۔اس معاہدے کے تحت بھارت نے پانچ برس تک پاکستان کو گیس فراہم کرنا تھی۔گزشتہ سال اگست میں بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے پاکستان کے ساتھ سفارتی مذاکرات منسوخ کر دیے جس کی وجہ سے یہ مذاکرات تعطل کا شکار ہوگئے۔ بھارتی اخبار دی ہندو کے مطابق پاکستانی ہائی کمشنر کی کشمیری رہنماؤں کے ساتھ بات چیت سے مودی پریشان تھے۔معاہدے کے مطابق ایل این جی مہاراشٹر یا گجرات میں ٹرمینلز کے ذریعے درآمد کی جانی تھی۔ جسے گیل کی موجودہ پائپ لائن نیٹ ورک کو استعمال کرتے ہوئے جالندھر تک منتقل کیا جانا تھا اس کے بعد پاکستان کو گیس فراہم کی جانی تھی۔ پردھان نے کہا کہ بھارت توانائی کے شعبے میں ہمسایہ ممالک کے ساتھ تعلقات کی اہمیت پر زور دیتا ہے۔وہ بنگلا دیش، سری لنکا، نیپال اور بھوٹان کے ساتھ اس سلسلے میں بات چیت میں مصروف ہے۔بھارت کے ہائیڈرو کاربن ذخائر سے توانائی بنگلا دیش پہنچ رہی ہے۔

مزید :

کامرس -