ورلڈ ٹی ٹونٹی،لندن کی ٹی وی کمپنی نے نقشے میں کشمیرکو متنازعہ علاقہ د کھا دیا

ورلڈ ٹی ٹونٹی،لندن کی ٹی وی کمپنی نے نقشے میں کشمیرکو متنازعہ علاقہ د کھا دیا

نئی دہلی (آن لائن)لندن کی معروف ٹیلی ویڑن پروڈکشن کمپنی سن سیٹ وائن نے بھارت میں جاری آئی سی سی ورلڈ ٹی ٹونٹی ٹورنامنٹ کیلئے اپنے مینول میں جموں وکشمیر کو ڈاٹڈ لائنز کے ذریعے متنازعہ علاقے کے طورپر ظاہر کیا ہے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق سن سیٹ وائن نے سٹار انڈیا پرائیویٹ لمیٹڈ کیلئے آئی سی سی ورلڈ کپ کے میچز براہ راست نشر کرنے کیلئے حقوق فراہم کئے ہیں ،بھارت کے 25صفحات پر مشتمل اپنے مینول کے چوتھے صفحے پر شائع ایک نقشہ شائع کیا ہے۔کمپنی نے نقشے میں آزاد جموں و کشمیر کو پاکستان کا حصہ دکھایا ہے جبکہ پورے مقبوضہ کشمیر کو ڈاٹڈ لائنز کے ذریعے متنازعہ علاقے کے طورپر ظاہر کیاہے۔ جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ کمپنی کے مطابق جموں وکشمیر ایک متنازعہ علاقہ ہے۔ اس مرتبہ بھارت نے سن سیٹ وائن کی طرف سے جموں وکشمیر کو متنازعہ علاقے کے طورپر ظاہر کرنے پر کوئی شور شرابہ نہیں مچایاہے۔تاہم کمپنی کی طرف سے آزاد کشمیر کو بھارت کا حصہ نہ دکھانے پر تنقید کی گئی ہے۔ کانگرس کے لیڈر منیش تیواری نے جو اطلاعات و نشریات کے وزیر مملکت رہے ہیں نئی دلی میں ایک میڈیا انٹرویو میں تشویش ظاہر کرتے ہوئے کہاکہ بھارتی حکومت کو اس کا سخت نوٹس لیتے ہوئے کمپنی کو اس وقت تک بھارت میں کام کی اجازت نہیں دینی چاہیے جب تک کہ وہ اپنے نقشے کودرست نہیں کرتی چاہے وہ کسی قسم کی بھی کرکٹ کی کوریج کرتی ہو۔2013میں لندن کے ایک اور بڑی کمپنی انٹرنیشنل منیجمنٹ گروپ نے بھی آئی پی ایل کے دوران کشمیر کو متنازعہ علاقہ دکھایاتھا۔واضح رہے کہ پہلے ہی بھارت میں دانشور اور یونیورسٹی کے طالب علم جموں وکشمیر پر بھارت کے یکطرفہ دعوے پر سوالات اٹھارہے ہیں۔ وہ سوال کر رہے ہیں کہ بھارت اور بین الاقوامی اداروں کے نقشوں میں تضاد کیوں ہے۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی


loading...