انتہا پسندی کا خاتمہ حکمرانوں کی ترجیحات میں شامل نہیں،پیر اعجاز ہاشمی

انتہا پسندی کا خاتمہ حکمرانوں کی ترجیحات میں شامل نہیں،پیر اعجاز ہاشمی

لاہور (خبر نگار خصوصی) جمعیت علما پاکستان کے مرکزی صدر پیر اعجاز احمدہاشمی نے گلشن اقبال پارک میں ہونے والی دہشت گردی کی شدید مذمت کرتے ہوئے آرمی چیف راحیل شریف سے کہا ہے کہ وہ پنجاب میں فوجی آپریشن شروع کریں۔انتہا پسندی اور دہشت گردی حکمرانوں کی ترجیحات میں شامل نہیں۔ علما کے وفود سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اسلام امن و سلامتی کا مذہب ہے، جو ایک انسان کے قتل کو پوری انسانیت کا قتل قراردیتا ہے

بے گناہوں کو قتل کرنے والے مسلمان تو کیا انسان کہلانے کے حقدار بھی نہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ مساجد ، سکول، پارک اور مارکیٹوں کا غیر محفوظ ہونا،حکومتوں کی موجودگی اور ریاستی اداروں کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے؟

پیر اعجاز ہاشمی نے کہاکہ قوم کو اورنج ٹرین اورمیٹروبس کی نہیں، امن کی ضرورت ہے۔ اگر قوم نہیں رہے گی تو ترقی کا کیا فائدہ؟ انہوں نے کہا کہ سندھ، بلوچستان اور خیبر پختونخواہ میں تو فوجی آپریشن ہورہا ہے اور موجود ہ حکمرانوں کو اس پر کوئی اعتراض بھی نہیں، مگر فوج اور رینجرز کو پنجاب میں آپریشن کی اجازت کیوں نہیں دی جارہی ،حالانکہ صوبہ پنجاب ہی انتہا پسندی اور دہشت گردی کا مرکز ہے۔مگر اس طرف توجہ نہیں دی جارہی ۔میاں نواز شریف اور شہباز شریف پنجاب میں آپریشن میں رکاوٹ بنے ہوئے ہیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 4