سانحہ اقبال ٹاؤن، جگہ جگہ پولیس ناکے،پیسے بٹورنے کا بھی انکشاف

سانحہ اقبال ٹاؤن، جگہ جگہ پولیس ناکے،پیسے بٹورنے کا بھی انکشاف

  

لاہور (وقائع نگار) سانحہ گلشن اقبال کے بعد صوبائی دارالحکومت میں پولیس بھی جاگ گئی۔ جگہ جگہ ناکے لگادیئے ان ناکوں پر کوئی جرائم پیشہ شخص ہاتھ نہ آسکا ۔لیکن پولیس والوں نے شریف شہریوں کا جینا حرام کردیا۔ ان پولیس اہلکاروں نے شہریوں سے پیسے بھی بٹورے۔ دوسری طرف سانحہ گلشن اقبال کے بعد رینجرز اور قانون نافذ کرنے والے اداروں نے شہر کے مختلف علاقوں میں سرچ آپریشن کئے ان آپریشنز میں متعدد مشکوک افراد کو گرفتار کیا گیا۔ ان افراد کو نامعلوم مقام پر منتقل کرکے تفتیش شروع کردی گئی ہے شہر کی نواحی بستیوں مریدکے، شاہدرہ، بند روڈ، ہنجروال، مانگا ، چوہنگ اور ریلوے سٹیشن کے علاقے خاص طور پر آپریشن کا مرکز بنے رہے۔ شبہ ظاہر کیا جارہا ہے کہ گلشن پارک میں 4 حملہ آور آئے تھے ان میں سے ایک بدبخت نے دھماکہ کرکے سینکڑوں خاندانوں کو عمر بھر کیلئے روتا چھوڑ دیا جبکہ 3 مبینہ خود کش حملہ آور اب بھی فرار ہیں جن کی تلاش کیلئے رات اور دن بھر چھاپے مارے گئے۔ ذرائع کے مطابق لاہور کے علاوہ فیصل آباد ، ملتان اور جنوبی پنجاب کے دیگر شہروں میں بھی دھماکے مارے گئے۔

مزید :

علاقائی -