سرکاری ہسپتالوں میں ادویات نایاب ،سینئر ڈاکٹروں کی غیر حاضری ،سانحہ گلشن اقبال پارک نے انتظامات کی قلعی کھول دی

سرکاری ہسپتالوں میں ادویات نایاب ،سینئر ڈاکٹروں کی غیر حاضری ،سانحہ گلشن ...

لاہور( جنرل رپورٹر،نمائندہ خصوصی)صوبائی دارالحکومت کی سیرگاہ گلشن اقبال پارک میں ہونے والے سانحہ نے سرکاری ہسپتالوں میں انتظامات کی قلعی کھول دی ہے، سانحہ کے زخمی ہسپتالوں میں پہنچنا شروع ہوئے تو وہاں سینئر ڈاکٹرز موجود تھے نہ ہی انتظامیہ کے آفیسر اور نہ ہی مطلوبہ تعداد میں ادویات کے ذخائرموجود تھے جس کے باعث سرکاری ہسپتال زخمیوں کو نجی ہسپتالوں میں منتقل کرتے رہے جبکہ ایمرجنسیوں میں مطلوبہ تعداد میں ادویات کا ذخیرہ نہ ہونے کے باعث ہسپتالوں کی انتظامیہ نے بازار سے ادویات خریدیں ۔تفصیلات کے مطابق سانحہ گلشن اقبال پارک کے زخمیوں کو شیخ زید ، جناح ،جنرل اور دیگر ہسپتالوں میں منتقل کرنے کا سلسلہ شروع ہوا تو ہسپتالوں کی اکثریت کے ایمرجنسی یونٹوں میں سینئر ڈاکٹرز موجود نہ تھے ،بعض ہسپتالوں میں ڈیوٹی اے ایم ایس اور ڈی ایم ایس تک موجود نہ تھے جبکہ اتوار کی چھٹی کے باعث پچاس فیصد عملہ حاضریاں لگا کر غائب ہو چکا تھا جس سے مریضوں کو فوری طبی امداد دینے میں شدید بد انتظامی دیکھنے میں آئی، سانحہ کے دو سے تین گھنٹے بعد انتظامیہ نے سینئر ڈاکٹروں کو ٹیلی فون کر کر کے ڈیوٹی پر بلایا گیایہاں تک کہ جو سینئر ڈاکٹرایمرجنسیوں میں آن کال تھے وہ بھی رات دس بجے تک اپنی ڈیوٹی پر واپس نہیں پہنچ سکے تھے۔

مزید : علاقائی