پنجاب میں ریٹیل کا کاروباری حجم 133ارب ڈالر سالانہ تک پہنچ گیا

پنجاب میں ریٹیل کا کاروباری حجم 133ارب ڈالر سالانہ تک پہنچ گیا

اسلام آباد (اے پی پی) شہری آبادیوں میں اضافہ اور صارفین کے رویوں میں تبدیلی کے باعث صوبہ پنجاب میں ریٹیل کا کاروبار 133 ارب ڈالر سالانہ تک پھیل چکا ہے۔ پنجاب بورڈ آف انویسٹمنٹ اینڈ ٹریڈ (پی بی آئی ٹی) کے اندازوں کے مطابق صوبہ میں ریٹیل کے کاروبار پر سالانہ 42 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کی جارہی ہے اور شہری آبادیوں میں ہونے والے تیز رفتار اضافہ اور صارفین کے رویوں میں تبدیلی کے باعث کئی مقامی اور بین الاقوامی گروپ صوبہ میں ریٹیل کے کاروبار میں سرمایہ کاری میں گہری دلچسپی لے رہے ہیں ۔ مقامی اور بین الاقوامی کمپنیاں صارفین کو ضروریات زندگی ایک ہی چھت تلے فراہم کرکے سہولت دے رہی ہے جس کے باعث صارفین بھی بازار سے مختلف اشیاء کی خریداری کی بجائے ہائپر سٹورز ‘ سپر مارکیٹس ‘ مالز وغیرہ کی تعداد میں آئے روز اضافہ ہو رہا ہے اور یہ سہولت اب بڑے شہروں کی بجائے چھوٹے شہروں اور قصبوں میں بھی دستیاب ہے۔ پی بی آئی ٹی کے مطابق اس وقت صوبہ میں ریٹیل کے شعبہ کی سالانہ فروخت کا حجم 105ارب ڈالر سالانہ تک بڑھ چکا ہے جبکہ سٹیٹ بینک آف پاکستان نے اس حوالے سے اپنی ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ 2011ء میں ریٹیل کی سالانہ فروخت کا حجم 96 ارب ڈالر تھا جو گزشتہ سال 2015ء کے دوران 133 ارب ڈالر تک بڑھ چکا ہے اقتصادی ماہرین نے کہا ہے کہ ریٹیل کا شعبہ معیشت کا تیسرا برا شعبہ ہے جو جی ڈی پی میں 18 فیصد کا حصہ دار ہے اور مجموعی افرادی قوت کے تقریباً 17 فیصد حصہ کو روز گار فراہم کررہا ہے انہوں نے کہا کہ ریٹیل کے شعبہ کی ترقی میں شہری آبادی میں ہونے والا اضافہ اور صارفین کے رجحانات کی تبدیلی کا بنیادی کردار ہے۔

مزید : کامرس