یوسف دہشت گرد نہیں تھا، زخمی دوست محمد یعقوب نے حقیقت کھول دی

یوسف دہشت گرد نہیں تھا، زخمی دوست محمد یعقوب نے حقیقت کھول دی

  

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک ) سانحہ گلشن پارک میں ابتدائی طور پر پولیس کی جانب سے خود کش حملہ آور قرار دیے جانے والے محمد یوسف کے حوالے سے اہم معلومات سامنے آگئیں ہیں ،یوسف اپنے 2 دیگر دوستوں کے ساتھ مل کر سیر کرنے پارک گیا اور ایک دوست کے ساتھ ہی بم دھماکے کا نشانہ بن گیا ،اس کے تیسرے زخمی دوست محمد یعقوب کا کہنا ہے کہ یوسف نے خودکش حملہ نہیں کیا اور نہ ہی وہ اس طرح کی حرکت کر سکتا ہے۔نجی ٹی وی کے مطابق سانحہ اقبال پارک میں ہونے والے بم دھماکے جسے فوری طور پر ہی پولیس کی جانب سے ’’خود کش حملہ ‘‘ قرار دیا گیاتھا اور حملے کی جگہ سے ملنے والے محمد یوسف نامی آدمی کے شناختی کارڈ کو ہی مبینہ طور پر ’’خودکش حملہ آور ‘‘ قرار دیا گیا تھا۔شناختی کارڈ کے مطابق یوسف مظفر گڑھ کا رہائشی تھا ،پولیس اور حساس اداروں نے محمد یوسف کے 3 بھائیوں ،والد اور چچا سمیت دیگر رشتہ داروں کو مظفر گڑھ سے گرفتار کر کے تحقیقات کے لئے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا تھا۔دن بھر ٹی وی چینلز پر محمد یوسف کے بارے میں طرح طرح کی خبریں گردش کرتی رہیں ،کسی نے اسے خودکش حملہ آور بتایا تو کسی نے خود کش حملہ آور کا ساتھی، کسی نے خبر چلائی کہ یوسف نے وانا سے دہشت گردی کی تربیت حاصل کی تھی ،لیکن نجی ٹی وی ’’اب تک ‘‘نے مبینہ خود کش حمہ آور کے حوالے سے پھیلی ہوئی تمام خبروں سے پردہ ہٹا دیا۔اقبال پارک میں محمد یوسف کے ساتھ زخمی ہونے والے اس کے تیسرے دوست محمد یعقوب کا کہنا ہے کہ وہ،یوسف اور اپنے تیسرے دوست بلال کے ہمراہ ایک ساتھ موٹر سائیکل پر پارک گئے ،وہاں تصاویر بنوائیں اور نماز بھی پارک میں ہی ادا کی ۔ نماز کی ادائیگی کے بعد وہ ابھی جھولوں کے قریب بیٹھے ہی تھے ایک دھماکہ ہو گیا ، میں (یعقوب )شدید زخمی جبکہ یوسف اور بلال دھماکے میں جاں بحق ہو گئے۔ہسپتال میں زیر علاج زخمی محمد یعقوب کا مزید کہنا تھا کہ وہ یوسف کو گزشتہ 8 سالوں سے جانتا ہے اور وہ دونوں چوبرجی کے ایک مدرسے میں ایک ساتھ پڑھتے تھے۔ اس کا کہنا تھا کہ یوسف بہت اچھا انسان تھا اور اچھرہ میں رہتا تھا جہاں وہ آن لائن لوگوں کو قرآن پاک کی تعلیم دیتا تھا۔اچھرہ میں مقیم محمد یوسف کے ایک دوسرے دوست محمد عمر کا کہنا ہے کہ وہ 3 ماہ سے یوسف کے ساتھ اکیڈمی میں لوگوں کو ’’آن لائن ‘‘ قرآن کی تعلیم دے رہا ہے ۔یوسف بہت شریف ،نمازی اور معاملہ فہم تھا۔محمد عمر نے کہا کہ یوسف کا کسی بھی کالعدم یا فرقہ پرست تنظیم سے کوئی تعلق نہ تھا اور نہ ہی اْس نے یوسف کو کبھی بھی کسی مشکوک سرگرمی میں ملوث نہیں دیکھا،وہ انتہائی ملنسار انسان تھا۔واضح رہے کہ گزشتہ روز گلشن اقبال پارک میں دھماکے کے کچھ دیر بعد ہی پولیس کی جانب سے یوسف کی ممکنہ خود کش حملہ آور قرار دیا گیا تھا ۔

مزید :

صفحہ اول -